Abd Add
 

چین اور امریکا سے متعلق

چین میں تعلیم کی شرح

* چین کی شہری آبادیوں میں کالج کی تعلیم ۶ء۵ فیصد ہے جبکہ دیہی آبادی میں یہ شرح ۲ء۰ فیصد ہے۔

* ایک اندازے کے مطابق دیہی علاقوں کے وہ چینی باشندے جنہوں نے کبھی اپنے دانتوں میں برش نہیں کیا ان کی تعداد ۵۰ کروڑ ہے۔

* نصب شدہ میزائل جن کا رخ تائیوان کی طرف ہے‘ ۷۰۰ کی تعداد میں ہیں۔

* چین میں سگریٹ نوشوں کی تعداد ۳۵ کروڑ ہے۔

(بشکریہ: ’’ٹائم میگزین‘‘)

* Merrill Lynch and Capgemini گروپ کے سروے کے مطابق گذشتہ سال کروڑ پتیوں (millionaires) کی تعداد دنیا میں ۸۰ لاکھ ۳۰ ہزار تھی جو ۲۰۰۳ء کے مقابلے میں چھ لاکھ زیادہ ہے۔

* شنگھائی میں اس وقت ۳۰۰ سے زائد آسمان رساں (Sky Scrapers) عمارتیں ہیں جبکہ ۱۹۸۵ء میں ایسی عمارت صرف ایک تھی۔

* بیجنگ میں نجی کاروں کی تعداد ۱۳ لاکھ ہے۔ ۱۹۹۷ء کے مقابلے میں یہ تعداد ۱۴۰ فیصد زیادہ ہے۔

* ۱۹۹۸ء تا ۲۰۰۴ء کے عرصے میں چین کے شہر چونگ کنگ میں ۹۰۰,۶۳ ریٹیل کی دکانیں کھلی ہیں۔

* چین کے شہر شین زہین (Shenzhen) کی آبادی میں ۱۹۹۰ سے ۶۲۰ فیصد اضافہ ہوا ہے یعنی اس کی آبادی ۱۰ لاکھ ۶۷ ہزار سے ایک کروڑ ۲۰ لاکھ ہو چکی ہے۔

* چین کے شہر لانزہو کے ایک رہائشی کی Disposable آمدنی ۸۵۹ ڈالر ہے جبکہ شنگھائی کے کسی رہائشی کی یہ آمدنی دگنی سے زیادہ یعنی ۲۰۱۰ ڈالر ہے۔

* گزشتہ سال چین میں موبائل فون سے پیغامات کی ترسیل کی تعداد ۲۱۸ بلین ہے۔

* دنیا میں جتنی آئس کریم کا صرفہ ہے اس کا ۲۰ فیصد حصہ صرف چین میں ہے۔

* امریکا چین تعلقات کے حوالے سے چین میں پائی جانے والی مثبت رائے ۶۳ فیصد ہے۔

* ۲۰۰۱ء سے جبکہ امریکا نے عراق پر حملہ کا آغاز کیا‘ امریکی فوجی افسروں میں طلاق کی شرح ۳۱۶ فیصد بڑھ چکی ہے۔

* گذشتہ سال کمیونسٹ پارٹی کے جن عہدیداران کے خلاف بدعنوانی کے لیے انضباطی کارروائی کی گئی ان کی تعداد ۱۷۰۸۵۰ ہے۔

* امریکی سرحد پر جعلی سامانوں کی ضبطی جو چین سے آتی ہیں کا تناسب ۶۶ فیصد ہے۔

* دنیا میں آٹو موبائل سے ہونے والی اموات میں چین اول نمبر پر ہے۔

(بشکریہ: ’’ٹائم میگزین‘‘)

Leave a comment

Your email address will not be published.


*


This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.