Abd Add
 

شمارہ یکم اگست 2016

وسطی ایشیا کا ’’گریٹ گیم‘‘

August 1, 2016 // 0 Comments

وسطی ایشیا کا سب سے زیادہ خود پسند حکمران تاجکستان میں ہے۔ ماضی میں دنیا کے سب سے اونچے اور اب ممکنہ طور پر دنیا کے سب سے بڑے جھنڈے پر امام علی رحمان لکھا ہوا ہے۔ ان کا دارالحکومت فخر کرتا ہے کہ جلد ہی اس کے پاس خطے کی سب سے بڑی مسجد ہوگی، جس کا زیادہ تر خرچہ قطر نے اٹھایا ہے۔ چین کے پیسوں سے بنا دنیا کا سب سے بڑا چائے خانہ بھی یہیں ہے جو عموماً ویران رہتا ہے؛ اور عظیم الشان قومی کتب خانہ بھی یہیں ہے جہاں کچھ لوگوں کے بقول کتابیں ہی نہیں۔ ترکمانستان کی حکومت چلانے والے دندان ساز قربان علی بردی محمدوف کا حال بھی کچھ ایسا ہی ہے۔ وہ خود کو ’’محافظ‘‘ (Arkadag) [مزید پڑھیے]

ترکی: صدارتی ترجمان، ابراہیم قالن کا خصوصی انٹرویو

August 1, 2016 // 0 Comments

رپورٹر: جناب ابراھیم قالن ٹی آرٹی ورلڈ کے ون آن ون پروگرام میں خوش آمدید۔ صدر ایردوان ایک طویل عرصے سے ملک میں جمہوریت کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے والی اور ملکی سلامتی کے لیے خطرہ تشکیل دینے والی ’’متوازی حکومتی ڈھانچے‘‘ کی موجودگی کا کہتے چلے آئے تھے۔ ان معلومات سے آگاہی ہونے کے باوجود یہ کیسے ہوا کہ ملک میں بغاوت کی کوشش کی گئی؟ کیا اس میں خفیہ معلومات کی کمزوری بھی شامل ہے؟ ابراھیم قالن: یہ گروہ ایک طویل عرصے سے ملک میں کارروائیوں میں مصروف تھا۔ خاص کر ۱۷ تا ۲۵ دسمبر کی کارروائی کے بعد انہوں نے قومی خطرے کی ماہیت اختیار کر لی۔ ہم نے اس تاریخ کے بعد سے کئی ایک تدابیر اختیار کیں۔ ان لوگوں [مزید پڑھیے]

ترک بغاوت اور مصر کی حمایت

August 1, 2016 // 0 Comments

سلامتی کونسل میں ترکی کی ناکام فوجی بغاوت کے خلاف مذمتی قرارداد مصر کی وجہ سے پیش نہ ہو سکی، جس پر ترک وزارت خارجہ نے مصر کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ قرارداد کے حوالے سے مصر کی مخالفت ہمارے لیے حیرت کا با عث نہیں، کیونکہ مصر کی موجودہ حکومت فوجی بغاوت کے نتیجے میں ہی اقتدار میں آئی تھی۔ پریس کانفرنس کے دوران بلغک کا کہنا تھا کہ ’’ فوجی بغاوت کے نتیجے میں برسر اقتدار آنے والی مصری حکومت کی جانب سے یہ قدرتی عمل ہے کہ وہ جمہوری طریقہ سے منتخب ہونے والے ہمارے صدر اور حکومت کے خلاف ہونے والی اس بغاوت پر کوئی اصولی اور واضح موقف اختیار کرے‘‘۔ مصر اقوام [مزید پڑھیے]