Abd Add
 

شمارہ یکم دسمبر 2011

پندرہ روزہ معارف فیچر کراچی
جلد نمبر:4، شمارہ نمبر:23-

مردم شماری: ۳۱ ؍اکتوبر ۲۰۱۱ء کو سات ارب واں انسان پیدا ہوا

December 1, 2011 // 0 Comments

جب سے اس زمین پر حضرتِ انسان کی آمد ہوئی ہے، حضرت عیسیٰؑ سے لگ بھگ پچاس ہزار برس قبل، ایک تخمینہ کے مطابق اب تک ایک سو آٹھ (۱۰۸) بلین لوگ اس زمین پر زندگی گزار چکے ہیں، جس میں سے ۵ء۶ فیصد اب بھی زندہ موجود ہیں۔ یہ عظیم تعدادہے، جن کو روٹی، کپڑا اور مکان کی ضرورت ہے، اس لیے پیدائش، اموات اور امراض کا شمار کرنے والے، معیشت دان، سائنس دان اور سیاست دان سب فکر مند اور پریشان ہیں کہ کیا یہ زمین اپنی بڑھتی آبادی کا بوجھ اٹھا سکے گی۔

امریکی مسلمان مایوس نہیں!

December 1, 2011 // 0 Comments

نائن الیون کے بعد کی صورت حال نے امریکا بھر میں مسلمانوں کے لیے شدید مشکلات پیدا کیں۔ انہیں قدم قدم پر دل برداشتہ کرنے والے حالات کا سامنا کرنا پڑا۔ انہوں نے امتیازی سلوک برداشت کیا اور اس کے خلاف آواز بھی اٹھائی۔ ایک بات خاصی خوش آئند ہے، یہ کہ امریکی میڈیا بھی اب اس بات کو تسلیم کر رہا ہے کہ حالات کی خرابی کے باوجود امریکی مسلمان دیگر مذہبی گروپوں کے مقابلے میں زیادہ پرامید ہیں۔ نائن الیون کے دس سال مکمل ہونے کی مناسبت سے ایک سروے کا اہتمام کیا گیا تاکہ یہ دیکھا جاسکے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ کے شروع کیے جانے سے اب تک کا زمانہ مسلمانوں پر کیسا گزرا ہے، وہ اس حوالے سے کیا [مزید پڑھیے]

مراکش: ’’جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی‘‘ کی کامیابی

December 1, 2011 // 0 Comments

مراکش میں اعتدال پسند اسلامی جماعت نے پارلیمانی انتخابات میں پہلی بار کامیابی حاصل کر لی ہے، یہ عرب ممالک میں انقلاب کے بعد ایک نئی مذہبی جماعت کی بڑی کامیابی ہے۔ یہ کامیابی اس وقت ہوئی ہے جب صرف ایک ماہ پہلے ہی تیونس میں انقلاب کے بعد اسلامی جماعت النہضہ نے کامیابی حاصل کی ہے اور مصر میں انتخاب کے لیے پیش گوئی جاری ہے (واضح رہے کہ مصر میں انتخاب کا پہلا مرحلہ اختتام پذیر ہے، جس میں آخری اطلاعات تک اخوان المسلمون کو برتری حاصل ہے)۔ مراکش کے وزیر داخلہ طیب شرقوی نے پریس کانفرنس میں اعلان کیا ہے کہ ۳۹۵ سیٹوں میں سے ۲۸۸ پر انتخابات ہوئے، جن میں اسلامی جماعت نے ۸۰ نشستوں پر کامیابی حاصل کرلی ہے جو [مزید پڑھیے]

مراکش: انتخابات کے بعد۔۔۔

December 1, 2011 // 0 Comments

مراکش میں ایک معتدل اسلامی جماعت فاتح کے طور پر سامنے آئی ہے۔ عرب میں اٹھنے والی حالیہ لہر میں یہ دوسرا واقعہ ہے کہ عوام نے اسلام پسندوں کو چُنا ہے۔ جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی نے ہفتہ تک جاری ہونے والے نامکمل ابتدائی نتائج کے مطابق سب سے زیادہ کامیابی حاصل کی ہے۔ مگر یہ کامیابی اکیلے حکومت بنانے کے لیے کافی نہیں ہے، یہ انتخابات ملک میں نئے دستور کے تحت پہلے انتخابات ہیں۔ اگر آگے بھی یہ نتائج برقرار رہے تو ’’شاہ‘‘ کو اس پارٹی ہی سے وزیراعظم نامزد کرنا ہوگا اور اس پارٹی کو مخلوط حکومت کی سربراہی کا اختیار ہوگا۔ پچھلے برس جمہوریت کے لیے مظاہروں کے بعد مراکش کے شاہ محمد ششم نے جو دستور بنایا، وہ مکمل آئینی [مزید پڑھیے]