Abd Add
 

شمارہ یکم مارچ 2013

پندروہ روزہ معارف فیچر کراچی
جلد نمبر:6، شمارہ نمبر:5

’’حلال‘‘ گوشت کی سَنَد کون جاری کرے؟

March 1, 2013 // 0 Comments

امریکی حکومت ایسے ہر معاملے سے دور رہنا چاہتی ہے، جو مذہب سے تعلق رکھتا ہو۔ یہ شاید ریاست ہائے متحدہ امریکا کے اساسی اصولوں میں سے ہے۔ شاید اسی بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے امریکی ریاست منیسوٹا (Minnesota) میں ۳۱جنوری ۲۰۱۳ء کو ایک فیڈرل کورٹ جج نے امریکا میں گوشت کے ایک بڑے برانڈ ’’ہبریو نیشنل‘‘ کے خلاف مقدمہ خارج کردیا۔ درخواست گزار نے ’’ہبریو نیشنل‘‘ کے اس دعوے کو چیلنج کیا تھا کہ اس کا ہاٹ ڈاگ یہودیت کے بیان کردہ بنیادی اصولوں کی رُو سے مکمل حلال ہے۔ مبصرین کا کہنا ہے کہ ہبریو نیشنل نے جس ہاٹ ڈاگ کو حلال قرار دیا ہے وہ مکمل طور پر حلال نہیں۔ جج کا موقف یہ تھا کہ امریکی آئین کی پہلی ترمیم [مزید پڑھیے]

مصر کا نیا دستور ۲۰۱۲ء|3

March 1, 2013 // 0 Comments

دفعہ۵۱: شہریوں کو تنظیمیں اور شہری ادارے بنانے کا حق حاصل ہے، جس کا صرف اعلامیہ درکار ہو گا۔ ایسے ادارے آزادانہ کام کر سکیں گے اور انہیں قانونی فرد (Legal Person) جیسا درجہ حاصل ہو گا۔ حکام ان اداروں یا ان کے انتظامی ڈھانچے کو عدالتی حکم، اور قانون میں بتائے گئے طریقۂ کار کے بغیر منسوخ نہیں کر سکیں گے۔ دفعہ۵۲: قانون سنڈیکیٹ (Syndicate)، یونینوں اور کوآپریٹو اداروں کی آزادی کا حق دیتا ہے۔ انہیں قانونی فرد جیسا درجہ حاصل ہو گا، انہیں جمہوری اساس پر تشکیل دیا جائے گا، وہ کمیونٹی کی خدمت میں شرکت کریں گے، وہ اپنے ارکان میں پیداواریت کا معیار بلند کریں گے اور ان کے اثاثوں کی حفاظت کریں گے۔ حکام صرف عدالتی حکم کے تحت انہیں [مزید پڑھیے]

’’اخوان المسلمون عوام کے دِلوں پر راج کرتی ہے!‘‘

March 1, 2013 // 0 Comments

کائنات عرب بیدار ہو رہی ہے، اور عالم اسلام تو ایک طرف، دنیا بھر کی نظریں عرب بہار اور اس کے ثمرات پر مرکوز ہیں، حالات کیا رخ اختیار کرتے ہیں، کچھ کہا نہیں جاسکتا۔ مگر اس حقیقت سے انکار ممکن نہیں کہ اگر تبدیلیاں عوامی امنگوں کے مطابق رہیں تو یہ نہ صرف اس ملک کی بلکہ امتِ مسلمہ کے لیے بھی نشاۃ ثانیہ ثابت ہوں گی۔ مصر میں آنے والی تبدیلی نے مغرب، خصوصاً اسرائیل اور امریکا کے پالیسی سازوں کی نیندیں حرام کر دی ہیں۔ اپنے تاریخی پس منظر اور محلِ وقوع کی اہمیت کی وجہ سے مصر میں ہونے والی معمولی تبدیلی کے جھٹکے بھی دنیا بھر میں محسوس کیے جاتے ہیں۔ اور خصوصاً جب معاملہ اسلام پسندوں کی کامیابی کا [مزید پڑھیے]