Abd Add
 

شمارہ 16 ستمبر 2018

پندرہ روزہ معارف فیچر کراچی
جلد نمبر:11، شمارہ نمبر:18

نجی شعبے کے ہاتھوں ایم کیو ایم کا ’’قتل‘‘

September 16, 2018 // 0 Comments

ایم کیو ایم نے ایک طویل مدت تک کراچی اور سندھ کے دیگر شہری علاقوں میں غیر معمولی مینڈیٹ حاصل کیا۔ اس کے قیام اور بقا کے کئی اسباب تھے۔ ایک بڑا سبب یہ وعدہ تھا کہ وہ اردو بولنے والے طبقے کی نئی نسل کو معاش کے بہتر مواقع فراہم کرے گی۔ یہ مواقع سرکاری شعبے میں تلاش کیے جانے تھے۔ جب نجی شعبہ پروان چڑھا تو مسابقت کا معاملہ اٹھ کھڑا ہوا، جس کے نتیجے میں سندھ کے شہری علاقوں میں سرکاری ملازمتوں کی گنجائش کم ہوگئی اور نجی شعبے میں مسابقت بڑھنے سے امکانات محدود ہوتے چلے گئے۔ حالیہ عام انتخابات نے اور کچھ واضح کیا ہو یا نہ کیا ہو، ایک بات تو بالکل واضح ہوگئی کہ متحدہ قومی موومنٹ کی [مزید پڑھیے]

کشمیر: ’خالی میدان میں الیکشن کی ڈفلی‘

September 16, 2018 // 0 Comments

جنوبی کشمیر کے حساس ترین ضلع شوپیاں آرش گنا پورہ گاؤں کی ایک چھوٹی سی پہاڑی پر پاکستانی جھنڈا لہرا رہا ہے۔ پہاڑی کے دامن میں گاؤں کا پنچایت گھر ہے، جو دو سال سے مقفل ہے۔ پنچایت گھر کے سنگِ بنیاد پر سبز اور سفید رنگ سے پاکستانی جھنڈا پینٹ کیا گیا ہے۔ ۲۰۱۶ء تک ولی محمد اسی پنچایت کے سرپنچ رہے ہیں۔ جموں وکشمیر کی آٹھ ہزار پنچایتوں کے لیے انتخابات طویل مدت کے بعد ۲۰۱۱ء میں ہوئے تھے۔ ان پنچایتوں کی مدتِ کار کا خاتمہ ۲۰۱۶ء میں عین اُسی وقت ہوا، جب مقبول مسلح کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت نے کشمیر میں ہندمخالف احتجاجی لہر بھڑکا دی۔ ولی محمد کہتے ہیں حکومت انتخابات کا اعلان تو کر رہی ہے، لیکن انتخابات میں [مزید پڑھیے]