Abd Add
 

مختصر مختصر

دلچسپ اور مختصر معلومات

تھرما میٹر

September 1, 2010 // 0 Comments

پولینڈ کا ماہرِ طبیعیات‘ ڈینیل گبریل فارن ہائیٹ (۱۶۸۶ء تا ۱۷۳۶ء) وہ پہلا سائنسدان تھا جس نے الکحل پر مبنی تھرما میٹر ایجاد کیا۔ اگرچہ اس سے قبل گیلیلیو نے بھی تھرما میٹر بنائے تھے لیکن وہ درست طور پر کام نہیں کرتے تھے۔ فارن ہائیٹ نے الکحل استعمال کرتے ہوئے پہلا کامیاب تھرما میٹر بنایا۔ بعد ازاں اس نے تھرما میٹر میں الکحل کے بجائے پارہ استعمال کیا جس سے زیادہ بہتر نتائج حاصل ہوئے۔ فارن ہائیٹ کی وفات کے بعد درجہ حرارت ناپنے کے ایک پیمانے کو اُس کی یاد میں ’’فارن ہائیٹ اسکیل‘‘ کا نام دیا گیا۔ یہ پیمانہ آج بھی استعمال کیا جارہا ہے‘ جس کے مطابق‘ پانی کے منجمد ہونے کا درجہ حرارت ۳۲ ڈگری فارن ہائیٹ ہے جبکہ ۲۱۲ [مزید پڑھیے]

پانی کا کیمیائی معجزہ

July 1, 2010 // 0 Comments

پانی میں جس طرح بہت سی اہم طبیعیاتی خصوصیات پائی جاتی ہیں‘ اس طرح وہ بہت سی اہم کیمیائی خصوصیات سے بھی مالا مال ہے۔ ان میں سب سے اہم خصوصیت یہ ہے کہ یہ تمام حل پزیر چیزوں کو اپنے اندر حل کرلیتا ہے اور بہت سی چیزیں بڑے اچھے انداز سے اس میں حل ہوجاتی ہیں۔ زندگی میں پانی کی اس خاصیت کی بڑی اہمیت ہے کیونکہ اس کی وجہ سے ندی نالوں اور دریاؤں کے ذریعے معدنیات اور نمکیات سمندروں تک پہنچی ہیں۔ اعداد و شمار سے معلوم ہوتا ہے کہ اس طریقے سے پانچ کھرب ٹن سے زیادہ نمکیات اور معدنیات سمندروں میں منتقل ہوچکی ہیں خود پانی میں بھی ان چیزوں کا وجود زندگی کے لیے ضروری ہے۔ دوسری جانب [مزید پڑھیے]

جنرل ڈیوڈ پیٹریاس اعصابی تنائو کا شکار

June 16, 2010 // 0 Comments

گزشتہ دنوں امریکی سینیٹ کی دفاعی کمیٹی کے اجلاس کے دوران جنرل ڈیوڈ پیٹریاس جو امریکی فوج کے مشرقِ وسطیٰ میں کماندار ہیں اور ساتھ ساتھ افغانستان میں جاری جنگ کے نگراں بھی ہیں‘ بے ہوش ہو گئے اور انہیں فوری طور پر کمرے سے باہر لے جایا گیا۔ سینیٹ کی مسلح افواج کی کمیٹی کے اجلاس میں جو دیگر لوگ شامل تھے‘ اُن کا کہنا ہے کہ جنرل پیٹریاس بہت دھیان سے سینیٹر جان میک کین (ری پبلکن) کا خطاب سن رہے تھے جو افغانستان میں جاری امریکی فوجی مداخلت پر اپنی تشویش کا اظہار کر رہے تھے۔ سینیٹر کو افغانستان میں جاری کارروائیوں پر اعتراض کر رہے تھے کہ خطاب کے دوران ہی جنرل ڈیوڈ پیٹریاس بے ہوش ہو گئے جنہیں فوری طور [مزید پڑھیے]

مختصر مختصر

February 16, 2010 // 0 Comments

خانۂ کعبہ کی چابی شاہِ یمن تبع اسد حمیری نے اپنے زمانے میں خانہ کعبہ میں دروازہ اور قفل لگوایا اور اس کی چابی کا اہتمام کیا۔ اس وقت سے یہ چابی شیبی خاندان کے پاس ہے۔ یہ ایک مہتمم بالشان اعزاز ہے جو اس خاندان کو حاصل ہے۔ شیبی خاندان قبیلہ قریش ہی کی ایک شاخ ہے جبکہ حضوراکرمؐ کا تعلق قبیلہ قریش کی دوسری شاخ سے تھا۔ زمانۂ قدیم سے غلاف کعبہ کے ساتھ ہی ایک مخصوص تھیلی بھی تیار کی جاتی تھی جو خانۂ کعبہ کی چابی رکھنے کے لیے ہوتی تھی۔ یہ تھیلی سبز ریشمی کپڑے کی ہوتی تھی جس پر زردوزی کا کام ہوتا تھا۔ اس تھیلی کے ایک طرف سورۂ نساء کی آیت ۵۸‘ دوسری طرف سورۂ نمل کی [مزید پڑھیے]

چین میں گوگل کی ’کاپی کیٹ‘

February 1, 2010 // 0 Comments

چین میں سماجی نیٹ ورکنگ اور سرچ کے لیے گوگل کی طرح کی ایک ویب سائٹ ’’گوجی‘‘ نام سے منظر عام پر آئی ہے جس کی برانڈنگ ہوبہو گوگل کی طرح ہے اور اس کا اختتامی تلفظ ’جی‘ میندرن زبان ’جیجی‘ کے طرز پر ہے جس کا مطلب بڑی بہن ہوتا ہے۔ ’’گوجی‘‘ پر سرچ کے نتائج چینی اصول و ضوابط کے تحت فلٹر ہو کر آتے ہیں اور اس میں حساس قسم کا مواد ظاہر نہیں ہوتا۔ (بحوالہ: ’’بی بی سی اردو ڈاٹ کام‘‘)

کائنات کی تخلیق

December 1, 2009 // 0 Comments

کائنات کی تخلیق قرآن میں کائنات کی تخلیق کا ذکر سورۃ الانعام کی آیت ۱۰۱ میں کیا گیا ہے: ’’وہ تو آسمانوں اور زمین کا موجد ہے‘‘۔ قرآن میں دی ہوئی یہ اطلاع دورِ حاضر کی سائنس کی دریافتوں کے عین مطابق ہے۔ آج کی فلکی طبیعیات (Astrophysics) اس نتیجے پر پہنچ چکی ہے کہ پوری کائنات اپنی پوری مادی وسعتوں سمیت ایک عظیم دھماکے کے نتیجے میں ظہور پذیر ہوئی تھی۔ اس واقعے کو ’’بگ بینگ‘‘ (Big Bang) یا ’’انفجارِ عظیم‘‘ کہا جاتا ہے۔ ’’بگ بینگ‘‘ سے ثابت ہوتا ہے کہ کائنات ایک نکتے سے‘ عدم سے وجود میں آئی۔ جدید سائنسی حلقے اس بات پر متفق الرائے ہیں کہ کائنات کے آغاز اور اس کے وجود کی واحد معقول اور قابلِ ثبوت وضاحت [مزید پڑھیے]

دنیا کی عمر رسیدہ آبادی

August 16, 2009 // 0 Comments

دنیا کی عمر رسیدہ آبادی امریکا کے ادارۂ مردم شماری کے مطابق ۲۰۴۰ء تک ۶۵ سال اور اس سے زیادہ عمر رکھنے والے افراد کی تعداد ۵۰۶ ملین سے ۱ء۳ بلین ہو جائے گی۔ ذیل میں پوری دنیا میں زیادہ عمر رکھنے والے افراد کی آبادی سے متعلق چند حقائق اعداد و شمار کی شکل میں دیئے گئے ہیں۔ جاپان میں آبادی کا ۲۲ فی صد حصہ ۶۵ سال یا اس سے زیادہ عمر پر مشتمل ہے جو کہ دنیا میں عمر رسیدہ لوگوں میں سب سے پہلے نمبر پر آتا ہے۔ چین میں ۱۰۶ ملین بوڑھے افراد ہیں جو کہ پوری دنیا میں آبادی کا سب سے بڑا حصہ ہے۔ دوسرا نمبر بھارت کا ہے جہاں ۵۹ء۶ ملین بوڑھے لوگوں کی تعداد ہے۔ امریکا [مزید پڑھیے]

برطانیہ میں شریعت عدالتیں

August 1, 2009 // 0 Comments

مغربی ذرائع ابلاغ کے پروپیگنڈے کے باوجود برطانیہ میں قائم ۸۵ شریعت عدالتوں سے غیرمسلموں نے بھی اپنے تنازعات نمٹانے کے لیے رجوع کرنا شروع کر دیا۔ برطانوی حکومت ان عدالتوں کے فیصلوں پر عملدرآمد کرانے کی پابند ہے۔ برطانوی اخبار دی ٹائمز کے مطابق شریعت عدالتوں میں آنے والے مقدمات کے ۵ فیصد فریقین مسلمان نہیں، ان کا کہنا ہے کہ ان عدالتوں کا طریقہ کار برطانوی عدالتوں سے زیادہ آسان ہے اور کم وقت میں انصاف فراہم کیا جاتا ہے، ایک شریعت عدالت کے ترجمان بیرسٹر فرید شیری نے بتایا کہ شریعت عدالتیں زبانی معاہدوں کا بھی احترام کرتی ہیں جبکہ برطانوی عدالتیں صرف دستاویزی ثبوت تسلیم کرتی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ شیخ فیض الاقطاب صدیقی کی عدالت میں ایک غیرمسلم نے [مزید پڑھیے]

سیب کا باقاعدہ استعمال معالج سے دور رکھتا ہے؟

July 16, 2009 // 0 Comments

یہ حکایت سب سے زیادہ مقبول و معروف ہے۔ اگرچہ کہ یہ درست ہے کہ سیب کے بھرپور استعمال سے جسم کو فائبر، وٹامن اور منرلز حاصل ہوتے ہیں۔ لیکن پورا دن فقط ایک ہی سیب پر گزار دینا عقلمندی نہیں۔ کیونکہ ایک سیب میں فقط ۴۰ کیلوریز، ۳ گرام فائبر، ۲ ملی گرام وٹامن C اور بہت تھوڑی مقدار میں آئرن، تھائی مین اور نیاسین موجود ہوتا ہے جو کہ مکمل صحت حاصل کرنے اور جسم کی بہتر کارکردگی کے لیے ناکافی ہوتا ہے۔ متوازن غذا میں سیب کو شامل کرنے کے بعد تو یقینا ایسا ہو سکتا ہے کہ آپ معالج سے دور رہیں لیکن غیر متوازن غذا یا پھر فاقہ کشی اختیار کرتے ہوئے ایک سیب کا استعمال قطعی طور پر آپ [مزید پڑھیے]

امریکی غربت

July 16, 2009 // 0 Comments

ایک ’’اینٹی ہنگر‘‘ گروپ کی طرف سے دیے گئے حکومتی اعداد و شمار کے مطابق اس وقت امریکا میں تقریباً ۵ء۳ ملین بچوں کو جو کہ ۵ سال سے کم عمر ہیں بھوک اور فاقہ کشی کا سامنا ہے۔ یہ بچوں کی تعداد کا ۱۷ فیصد سے زائد حصہ ہے جو خوراک کی کمی کے باعث ذہنی و نشونمائی نقصان سے گزر سکتے ہیں۔ غیر منافع بخش ادارہ ’’فیڈنگ امریکا‘‘ کی یہ رپورٹ امریکا کے شعبہ مردم شماری اور شعبہ زراعت کے ۰۷۔۲۰۰۵ء کے اعداد و شمار کی بنیاد پر ہے۔ اس ادارے کے مطابق مئی ۲۰۰۹ء میں شائع ہونے والی یہ پہلی رپورٹ ہے کہ جس نے ۵ سال سے کم عمر بچوں کی اس تعداد پر غور کیا۔ ’’فیڈنگ امریکا‘‘ پورے ملک میں [مزید پڑھیے]

بنگلا دیش میں سید ابوالاعلیٰ مودودی کی تصانیف پر پابندی

June 16, 2009 // 0 Comments

بنگلا دیش پارلیمنٹ کی قائمہ کمیٹی برائے تعلیم نے مدارس میں پڑھائی جانے والی کتب اور نصاب کے حوالے سے ۲ جون کو حکومت کو نئی سفارشات پیش کی ہیں۔ کمیٹی کی سفارشات کے مطابق مدارس میں غیر منظور شدہ کتابوں خصوصاً جماعت اسلامی کے بانی سید ابوالاعلیٰ مودودیؒ کی تصانیف پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ کمیٹی نے تجویز دی ہے کہ تمام مدارس اپنے نصاب میں وہ کتابیں شامل کریں گے جنہیں مدرسہ بورڈ منظور کرے گا۔ قائمہ کمیٹی کے چیئرمین اور ورکرز پارٹی بنگلا دیش کے صدر راشد خان مینن نے ’’ڈیلی اسٹار‘‘ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے حکومت کو یہ تجویز دی ہے کہ وہ تعلیم کے ہر شعبے میں تخلیقی طریقہ کار کا نفاذ کرے۔ ہم نے [مزید پڑھیے]

معاشی بحران اور سرمایہ دارانہ ترجیحات

June 16, 2009 // 0 Comments

برطانیہ کے عراق اور افغانستان میں ملٹری اخراجات اس مالیاتی سال تقریباً ۵ء۴ بلین پائونڈ سے تجاوز کرگئے ہیں، جو کہ ۵۰ فیصد سے زائد سالانہ اضافہ ہے۔ جنوبی افغانستان میں ملٹری آپریشن کے اخراجات کا تخمینہ تقریباً ۶ء۲ بلین پائونڈ ہے جو کہ گزشتہ سال ۵ء۱ بلین پائونڈ تھا۔ زیادہ ترپیسہ سپاہیوں کو بھاری مسلح گاڑیاں فراہم کرنے پر خرچ ہوا ہے کیونکہ سپاہیوں کو مستقل سڑکوں اور شاہراہوں کے ساتھ دھماکوں کا سامنا تھا۔ وزارتِ دفاع کے اعداد و شمار کے مطابق اس سال برطانیہ کے ملٹری اخراجات میں ۲ بلین پائونڈ کا اضافہ ہوا ہے لہٰذا حیران کن طور پر حکومت نے بصرہ سے فوج ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ (بحوالہ: ’’سوشلسٹ اسٹینڈرڈ‘‘ برطانیہ۔ مارچ ۲۰۰۹ء)

امریکی فوجی ماہرین پاکستان میں

May 1, 2009 // 0 Comments

پاکستان کے قبائلی علاقے میں القاعدہ اور طالبان کے خلاف جاری جنگ میں ستر سے زیادہ امریکی فوجی ماہرین پاکستانی فوج کی خفیہ طور پر مدد کر رہے ہیں۔ امریکا میں شائع ہونے والے مقتدر روزنامے ’’نیویارک ٹائمز‘‘ نے امریکی فوجی ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ ان فوجی ماہرین میں سے زیادہ تر کا تعلق امریکا کی اسپیشل فورسز سے ہے جو پاکستانی فوج اور نیم فوجی دستوں کو تربیت کے علاوہ خفیہ معلومات اور فوجی کارروائی کی حکمت عملی تیار کرنے میں مدد فراہم کر رہی ہیں۔ اخبار کا کہنا ہے کہ یہ فوجی ایک ’’خفیہ ٹاسک فورس‘‘ کا حصہ ہیں اور اس کی نگرانی امریکا کی ’’سینٹرل کمانڈ‘‘ اور ’’اسپیشل آپریشن کمانڈ‘‘ کرتی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکی اور [مزید پڑھیے]

1 2 3 4 5 6 14