Abd Add
 

معارف فیچر

۱۔ معارف فیچر ہر ماہ کی یکم اور سولہ تاریخوں کو شائع کیا جاتا ہے۔ اس میں دنیا بھر سے (ہمیں) دستیاب ایسی معلومات کا انتخاب پیش کیا جاتا ہے‘ جو اسلام سے دلچسپی اور ملت اسلامیہ کا درد رکھنے والوں کے غور و فکر کے لیے اہم یا مفید ہوسکتی ہیں۔

۲۔ پیش کیا جانے والا لوازمہ بالعموم بلاتبصرہ شائع کیا جاتا ہے۔ کسی مضمون‘ نقطہء نظر‘ خیال یا معلومات کے انتخاب کی وجہ اس سے ہمارا اتفاق نہیں‘ اس کی اہمیت ہوتی ہے۔ کسی مضمون یا معلومات کی مدلل تردید یا اس سے اختلاف پر مبنی لوازمہ کو بھی جگہ دی جاسکتی ہے۔

۳۔ فیچر کو بہتر بنانے کے لیے مفید معلومات کے حصول یا ان کے ذرائع تک رسائی میں آپ کی مدد کا خیرمقدم کیا جائے گا۔

۴۔ ہمارے فراہم کردہ لوازمے کے مزید‘ لیکن غیرتجارتی ابلاغ کی عام اجازت ہے۔

۵۔ معارف فیچر کی کوئی قیمت مقرر نہیں۔ تاہم عطیات کی ضرورت بھی رہتی ہے اور عطیات قبول بھی کیے جاتے ہیں۔

انسانی زندگی قبل از پیدائش

January 1, 2006 // 0 Comments

اسلام میں انسانی زندگی کے ہر مرحلے کا احترام کیا گیا ہے۔ اس گفتگو میں انسانی زندگی کے قبل از پیدائش مراحل کا اسلامی شریعت کے حوالے سے جائزہ لیا گیا ہے۔ گذشتہ تین چار دہائیوں سے انسانی زندگی‘ جان اور روح کے معاملات کو سائنسی ترقی اور بہت سے حیاتِ طبی (Bio-medical) ترقی کے عنوانات کے حوالوں سے دیکھا گیا ہے جو انسانی زندگی‘ صحت‘ طبعی‘ نفسیاتی اور سماجی ترتیب میں نمایاں ہیں۔[مزید پڑھیے]

اٹلی میں نیسلے کی مصنوعات پر پابندی!

January 1, 2006 // 0 Comments

نومبر کے مہینے میں اٹلی کے ایک شہر ایسکولی میں بچوں کے لیے تیار کردہ نیسلے کے بیس لاکھ لیٹر دودھ کو پولیس نے ضبط کر لیا ہے۔ یہ کارروائی آلودہ دودھ کے خلاف عدالت کے فیصلے کے بعد عمل میں آئی۔ عدالت نے یہ فیصلہ مارکیٹ میں موجود تین کروڑ لیٹر دودھ کے خلاف دیا تھا۔ عدالت کے فیصلے کے مطابق جن برانڈز کے دودھ کی فروخت اور تیاری قطعاً ممنوع قرار دے دی گئی ہے‘ ان میں Mio‘ Nidina 1 & 2 اور Mio Cereali شامل ہیں۔ ان برانڈز کے دودھ میں ایک خاص کیمیکل “Isopropylthioxanthone” پایا گیا ہے جو مصنوعات کی پیکنگ پر استعمال ہونے والی سیاہی میں پایا جاتا ہے۔ اس کارروائی کے جواب میں نیسلے کمپنی کی انتظامیہ نے اس [مزید پڑھیے]

عراق جنگ گزشتہ دو ہزار سال میں سب سے بڑی حماقت ہے؟

December 16, 2005 // 0 Comments

امریکن جیٔوش ویکلی کی تازہ اشاعت میں ایک زبردست مضمون شائع ہوا ہے۔ اس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ’’صدر بش سے جواب طلب کیا جائے اور امریکی عوام کو گمراہ کرنے اور ۹ ق م میں شاہ آگسٹس کے بعد سے جنہوں نے اپنے سپاہیوں کو جرمنی لشکر کشی کے لیے بھیجا اور سب کو گنوادیا‘ تاریخ کی نامعقول ترین جنگ چھیڑنے پر مقدمہ کیا جائے۔‘‘ عراق جنگ کو گزشتہ ۲۰۱۴ برسوں میں سب سے بے وقوف ترین اقدام قرار دینا اس تمام عرصہ میں تمام واقعات پر بالکل جھاڑو پھیر دینے والا بیان ہے مگر لکھاری اس معلومات کے سلسلہ میں بہت قابل ہیں۔ یہ مارٹن وان کریولڈ یروشلم میں جامعہ عبرانی (Hebrew University) کے ایک پروفیسر ‘ دنیا کے ممتاز عسکری [مزید پڑھیے]

1 143 144 145 146 147 163