Abd Add
 

معارف فیچر

۱۔ معارف فیچر ہر ماہ کی یکم اور سولہ تاریخوں کو شائع کیا جاتا ہے۔ اس میں دنیا بھر سے (ہمیں) دستیاب ایسی معلومات کا انتخاب پیش کیا جاتا ہے‘ جو اسلام سے دلچسپی اور ملت اسلامیہ کا درد رکھنے والوں کے غور و فکر کے لیے اہم یا مفید ہوسکتی ہیں۔

۲۔ پیش کیا جانے والا لوازمہ بالعموم بلاتبصرہ شائع کیا جاتا ہے۔ کسی مضمون‘ نقطہء نظر‘ خیال یا معلومات کے انتخاب کی وجہ اس سے ہمارا اتفاق نہیں‘ اس کی اہمیت ہوتی ہے۔ کسی مضمون یا معلومات کی مدلل تردید یا اس سے اختلاف پر مبنی لوازمہ کو بھی جگہ دی جاسکتی ہے۔

۳۔ فیچر کو بہتر بنانے کے لیے مفید معلومات کے حصول یا ان کے ذرائع تک رسائی میں آپ کی مدد کا خیرمقدم کیا جائے گا۔

۴۔ ہمارے فراہم کردہ لوازمے کے مزید‘ لیکن غیرتجارتی ابلاغ کی عام اجازت ہے۔

۵۔ معارف فیچر کی کوئی قیمت مقرر نہیں۔ تاہم عطیات کی ضرورت بھی رہتی ہے اور عطیات قبول بھی کیے جاتے ہیں۔

لبنان کے سابق وزیراعظم رفیق الحریری کا قتل

March 1, 2005 // 0 Comments

گذشتہ پیر کو رفیق الحریری کے قتل کا واقعہ پُراسراریت کے نرغے میں ہے۔ اسرائیل نے فوراً ہی اس قتل کا الزام شام پر عائد کیا جبکہ دمشق اور تہران نے تل ابیب پر انگشت نمائی کی ہے۔ تہران کا ردِعمل بالکل واضح تھا۔ اس نے سابق وزیراعظم کے قتل کو صیہونی دہشت گردی کا واقعہ قرار دیا۔ الحریری کے قتل میں جو بم استعمال ہوا ہے‘ وہ انتہائی جدید ٹیکنالوجی کا حامل تھا جس نے کار کے چارجنگ ڈیوائس کو ناکارہ بنا دیا تھا۔ ایران کے مطابق صرف صیہونی حکومت جیسا کوئی منظم گروہ ہی اتنے جدید ترین آپریشن کا اہل ہو سکتا ہے۔ اس کا مقصد لبنان کو عدم استحکام سے دوچار کرنا ہے۔ اس کے ساتھ ہی ایک عیرمعروف گروہ نے اس [مزید پڑھیے]

فلسطین: جہاں زندگی کی کوئی ضمانت نہیں!

March 1, 2005 // 0 Comments

دس سالہ نوراں عباد کسی بھی عالم طالبہ کی طرح اسکول گئی تھی‘ کیونکہ یہ دن اس کے لیے بہت ہی خاص اور اہم تھا‘ اسے اسکول کا رزلٹ ملنے والا تھا۔ لیکن اسے کیا معلوم کہ بدقسمتی اس کے تعاقب میں ہے۔ وہ جب واپس آئی تو وہ خود اپنے پیروں پر چل کر نہیں بلکہ دوسروں کے کاندھوں پر سوار ہو کر آئی اور اسے رزلٹ کے بجائے موت کا سرٹیفکیٹ مل چکا تھا۔ یہ کہانی فلسطین میں نئی نہیں ہے بلکہ یہ وہاں کا معمول ہے۔ نوراں کی طرح بے شمار افراد بغیر کسی غلطی کے روزانہ اسرائیلی فوج کی گولیوں کا نشانہ بن رہے ہیں۔ ان میں معصوم طلبہ بھی شامل ہیں جو اسکول جاتے ہیں‘ بزرگ افراد ہیں‘ جو سودا [مزید پڑھیے]

موجودہ عالمی انتشار اور اسلام کا امن آفریں پیغام

March 1, 2005 // 0 Comments

آج پورا عالمِ اسلام جس بدامنی و انارکی اور انتشار و لامرکزیت کا شکار ہے‘ تمدنی ترقیات اور معاشی سرگرمیوں کے دھارے میں جس طرح بہہ رہا ہے‘ وہ روزِ روشن کی طرح عیاں ہے۔ ہر طرف بنیاد پرستی‘ شدت پسندی اور جنگجویانہ سرگرمیوں کا دور دورہ ہے۔ پوری دنیاے انسانیت خون میں نہا رہی ہے۔ ہر چہار جانب خون کے فوارے پھوٹتے نظر آرہے ہیں۔ قیمتی جانیں ضائع ہو رہی ہیں۔ ہر ایک دوسرے کے حق میں زہرِ قاتل بنا ہوا ہے۔ بغض و عناد‘ کینہ کپٹ‘ بدگمانی‘ بے اعتمادی‘ عزت و آبرو کی بے وقعتی‘ مردم آزاری و آدم بیزاری‘ عقل پر جذبات کی حکمرانی‘ دور اندیشی پر کوتاہ اندیشی کا غلبہ‘ عوامی مفاد پر ذاتی اغراض کی ترجیح‘ جذبات کے پیچھے بہہ [مزید پڑھیے]

پاکستان میں خودکشی کا بڑھتا ہوا رجحان

March 1, 2005 // 0 Comments

گزشتہ سال کے دوران اخبارات کے مطابق ملک بھر کے طول و عرض سے خودکشی کے ۲۵۰۷ واقعات درج ہوئے۔ خودکشی کے ان اعداد و شمار کے علاوہ ۱۶۳۴ افراد نے ملک کے مختلف علاقوں میں خودکشی کی کوشش کی‘ اس طرح ۴۱۴۱ افراد نے مجموعی طور پر خودکشی جیسا غیرانسانی اور مذہبی اقدار کے منافی عمل اختیار کرتے ہوئے انسانی جانیں ضائع کیں۔ پاکستان میں خودکشی آہستہ آہستہ مجموعی قومی صحت کا مسئلہ بنتی جارہی ہے کیونکہ ملک کے نوجوانوں میں معاشرتی و معاشی عوامل مثلاً غربت‘ بے روزگاری کی وجہ سے خودکشی کا رجحان پروان چڑھ رہا ہے۔ براعظم ایشیا اور بالخصوص جنوبی ایشیا میں معاشرتی تبدیلیوں‘ غیرمستحکم معاشی نظام‘ ڈپریشن یا ذہنی دبائو‘ منشیات کا استعمال اور کمزور خاندانی رویے خودکشی کے [مزید پڑھیے]

تیل کا عالمی بحران

March 1, 2005 // 0 Comments

ماہرینِ ارضیات کا خیال ہے کہ تیل پر انحصار کرنے والے امریکا جیسے ملک کے لیے تیل کی کمی اہم تبدیلیوں کا سبب بنے گی۔ تیل کی بڑھتی ہوئی طلب کو نئے دریافت کیے جانے والے ذخائر کبھی بھی پورا نہیں کر سکیں گے۔ امریکا کے ہرے بھرے کھیتوں کے درمیان تارکول کی سیاہ سڑکیں اور شام کے وقت آسمان پر جیٹ طیاروں سے نکلتا ہوا دھواں اس وقت دلچسپ مناظر پیش کرتا ہے‘ مگر حقیقت یہ ہے کہ امریکا کی پوری صنعت ان سڑکوں اور فضائی راستوں پر انحصار کرتی ہے‘ سڑکوں پر چلنے والے ٹرکوں‘ کام پر لے جانے والی گاڑیوں اور تفریح کے لیے دور دراز مقامات پر لے جانے والے ہوائی جہازوں پر امریکیوں کا انحصار بہت زیادہ ہے۔ ماہرین کا [مزید پڑھیے]

وحدت و اتحاد ایک عظیم نعمتِ الٰہی

March 1, 2005 // 0 Comments

تمام تعریفیں اس خداے وحدہ لاشریک کے لیے مخصوص ہیں جو اس کائنات کا خالق و مالک ہے۔ جس نے اپنی مخلوقات کی فلاح و بہبود کو نگاہ میں رکھتے ہوئے زمین و آسمان کو زیورِ وجود سے آراستہ کیا اور اس دنیا کو مختلف النوع نعمتوں سے مالا مال کر دیا۔ جس نے اپنے برگزیدہ بندوں کو اپنا پیغمبر و رسول بنا کر اس دنیا میں بھیجا تاکہ وہ بنی نوع انسان کی ہدایت و رہنمائی کا کام انجام دیں اور لوگوں کو ہر طرح کی گمراہیوں سے بچتے ہوئے اس راہ پر چلنے کا درس دیں جو صراطِ مستقیم ہے اور جس پر گامزن رہنے والے عظیم الٰہی نعمتوں کے حقدار ہوتے ہیں۔ واضح رہے کہ راہِ حق کی طرف ہدایت و رہنمائی [مزید پڑھیے]

اسلامی جمہوریۂ ایران حقوقِ انسانی کے آئینے میں

February 16, 2005 // 0 Comments

آج کے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ترقی یافتہ دور میں چہاردانگ عالم میں حقوقِ انسانی کا چرچا ہے۔ مغربی اقوام جو بزعمِ خود انسانی ارتقا کی انتہائی منازل پر ہیں‘ انسانی حقوق کی بظاہر چمپئن اور علمبردار بنی ہوئی ہیں۔ وہ ہر ملک اور معاشرے کو اپنے بنائے ہوئے اسی پیمانے سے ماپتے ہیں۔ ان کے فلسفی اور دانشور ایک طرف سے تہذیبوں کے ٹکرائو (Clash of Civilizations) اور اختتامِ زمانہ (End of times) کی تھویریاں پیش کر رہے ہیں تو دوسری طرف انہوں نے حقوقِ بشر کے نام پر مداخلتوں سے دنیا کے باقی ممالک کا ناطقہ بند کر رکھا ہے۔ وہ انہیں پسماندہ‘ غیرترقی یافتہ اور جہالت زدہ تصور کرتے ہیں اور اسی تناظر میں ہمہ وقت ان کے خلاف شور و غل اور [مزید پڑھیے]

اسرائیلی قید میں ۸۰ فیصد فلسطینی کم عمر ہیں!

February 16, 2005 // 0 Comments

بچے کسی بھی قوم اور ملک کا مستقبل ہوتے ہیں‘ یہی بچے آنے والے وقتوں میں اپنے ملک و قوم کی باگ ڈور سنبھالتے ہیں۔ عیسائیوں اور یہودیوں نے ایک طے شدہ منصوبے کے تحت فلسطینیوں کی نسل کشی کا منصوبہ بنایا اور فلسطینی بچوں کو موت کا نشانہ بنانا شروع کر دیا۔ جس میں اب تیزی آتی چلی جارہی ہے اس کا اندازہ یوں لگایا جاسکتا ہے کہ تحریکِ انتفاضہ کے ابتدائی ڈھائی سال کے دوران اسرائیلی فوجیوں نے ۲۳۰۰ سے زائد فلسطینیوں کو شہید کیا جس میں سب سے زیادہ تعداد بچوں کی ہے۔ خود اسرائیلی حکومت کا دعویٰ ہے کہ ان میں سے بہت سے فلسطینی بچوں کی شہادت اس وقت واقع ہوئی جب مسلح اسرائیلی فوجیوں نے تصادم کے دوران فائرنگ [مزید پڑھیے]

1 143 144 145 146 147 150