معارف فیچر

۱۔ معارف فیچر ہر ماہ کی یکم اور سولہ تاریخوں کو شائع کیا جاتا ہے۔ اس میں دنیا بھر سے (ہمیں) دستیاب ایسی معلومات کا انتخاب پیش کیا جاتا ہے‘ جو اسلام سے دلچسپی اور ملت اسلامیہ کا درد رکھنے والوں کے غور و فکر کے لیے اہم یا مفید ہوسکتی ہیں۔

۲۔ پیش کیا جانے والا لوازمہ بالعموم بلاتبصرہ شائع کیا جاتا ہے۔ کسی مضمون‘ نقطہء نظر‘ خیال یا معلومات کے انتخاب کی وجہ اس سے ہمارا اتفاق نہیں‘ اس کی اہمیت ہوتی ہے۔ کسی مضمون یا معلومات کی مدلل تردید یا اس سے اختلاف پر مبنی لوازمہ کو بھی جگہ دی جاسکتی ہے۔

۳۔ فیچر کو بہتر بنانے کے لیے مفید معلومات کے حصول یا ان کے ذرائع تک رسائی میں آپ کی مدد کا خیرمقدم کیا جائے گا۔

۴۔ ہمارے فراہم کردہ لوازمے کے مزید‘ لیکن غیرتجارتی ابلاغ کی عام اجازت ہے۔

۵۔ معارف فیچر کی کوئی قیمت مقرر نہیں۔ تاہم عطیات کی ضرورت بھی رہتی ہے اور عطیات قبول بھی کیے جاتے ہیں۔

پاکستان کی حمایت کیوں؟ | گزشتہ سے پیوستہ

December 1, 2013 // 0 Comments

اگر پاکستان ہندو کے لیے مفید ہے، تو وہ اس کی مخالفت کے لیے اس قدر مضطرب کیوں ہے؟ علامہ عثمانی نے فرمایا کہ آپ کا یہ دعویٰ کہ ’’پاکستان قائم ہونے میں سراسر مسلمانوں کا نقصان اور ہندوئوں کا فائدہ ہے‘‘۔ اگر تسلیم کر لیا جائے، تو کیا آپ باور کر سکتے ہیں کہ ہندو پاکستان کی مخالفت محض اس لیے کر رہا ہے کہ اس میں مسلمانوں کا نقصان ہے اور وہ کسی طرح بھی مسلمانوں کا نقصان دیکھنے کو تیار نہیں

کیمبرج یونیورسٹی کی ’’مولانا حاضر امام‘‘ کو ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگری

November 16, 2013 // 1 Comment

جون ۲۰۱۳ء بروز جمعہ ایک پُروقار اور تاریخی تقریب میں کیمبرج یونیورسٹی نے ’’مولانا حاضر امام‘‘ (آغا خانی اسماعیلیوں کے امام پرنس کریم آغا خان) کو الٰہیات میں ڈاکٹریٹ کی اعزازی سند پیش کر دی۔ اس طرح ’’حاضر امام‘‘ کیمبرج کی طویل تاریخ میں پہلے ’’مسلمان‘‘ ہیں جنہیں اِس اعزاز سے نوازا گیا ہے۔

1 63 64 65 66 67 80