Abd Add
 

مختصر مختصر

دلچسپ اور مختصر معلومات

افغانستان میں امریکی فوجیوں کی اموات

August 16, 2012 // 0 Comments

پینٹاگون کے مطابق ۱۱؍سالہ افغان جنگ میں امریکی فوجیوں کی ہلاکتیں دو ہزار سے تجاوز کر گئی ہیں۔ انڈی پینڈنٹ انٹرنیٹ سائٹ نے آپریشن (Enduring Freedom) کے آغاز سے جو اعداد و شمار جمع کیے ہیں، اس کے مطابق مرنے والے امریکیوں کی تعداد دو ہزار آٹھ ہے۔ پینٹاگون کی شمار کردہ ۲۰۰۰؍اموات میں ۱۵۷۷؍اموات مقابلے (Combat) میں ہوئیں جن میں ۳۴ خواتین فوجی بھی شامل ہیں جبکہ ۱۶۴۰۲؍فوجی زخمی بھی ہوئے۔ سال ۲۰۱۲ء کے آغاز سے ابھی تک ۱۵۰ ؍سے زائد امریکی فوجی مارے جاچکے ہیں۔ اعداد و شمار کے مطابق سال ۲۰۱۰ء میں امریکی فوجیوں کا سب سے زیادہ نقصان ہوا جس میں ۴۹۹ فوجی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے، جبکہ ۲۰۱۱ء میں ۴۱۴ فوجی مارے گئے۔ واضح رہے کہ افغانستان میں امریکی [مزید پڑھیے]

روس برطانیہ تعلقات کی بحالی؟

August 16, 2012 // 0 Comments

یہ دعویٰ کہ روسی صدر ولادیمیر پیوٹن (Vladimir Putin) برطانیہ میں بالکل ذاتی حیثیت میں اولمپک گیمز میں جوڈو کے کھیل کو دیکھنے آئے ہیں، ایک ڈپلومیٹک کوشش کے سوا کچھ نہیں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ روسی صدر اپنے پسندیدہ کھیل میں بہت زیادہ دلچسپی رکھتے ہیں مگر ان کا دورہ اس روایت کی ایک عملی مثال تھا کہ کھیل کو سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا جائے۔ یہ روایت ایک عرصہ سے چلی آرہی ہے۔ یہ بات تو یقینی ہے کہ ولادیمیر پیوٹن ڈیوڈ کیمرون کے ہمراہ جوڈو کے مقابلے دیکھنے کے لیے آئے۔ اس سے قبل دونوں رہنما ڈائوننگ اسٹریٹ میں غیر رسمی گفتگو کر چکے تھے۔ پچھلے ایک عشرے کے دوران ولادیمیر پہلے روسی سربراہ ہیں جنہوں نے برطانیہ کا [مزید پڑھیے]

غلام اعظم کے خلاف غیرانسانی کارروائی

May 1, 2012 // 0 Comments

اگر مقدمے کی کارروائی خامیوں سے پُر ہو تو انصاف کا خون ہوتا ہے اور اگر مقدمہ مذموم مقاصد کی بنیاد پر کھڑا ہو تو ناانصافی پر منتج ہوتا ہے۔ جماعت اسلامی بنگلہ دیش کے سابق امیر پروفیسر غلام اعظم کے ساتھ نا انصافی کی حد یہ ہے کہ انہیں ۹۰ سال کی عمر میں جنوری میں گرفتار کیا گیا اور اب تک قید تنہائی میں رکھا گیا ہے۔ ان پر ۱۹۷۱ء میں بنگلہ دیش کے قیام کی جنگ کے دوران انسانیت سوز مظالم کے الزامات عائد کیے گئے ہیں جو سراسر بے بنیاد ہیں۔ جنگی جرائم کے ایک ایسے ٹربیونل میں ان کے خلاف کارروائی کی جانے والی ہے جس کی قانونی حیثیت پر ایمنسٹی انٹرنیشنل، ہیومن رائٹس واچ، اقوام متحدہ کی انسانی حقوق [مزید پڑھیے]

شنگھائی ٹاور

April 16, 2012 // 0 Comments

شنگھائی ٹاور کی ۱۲۸ ؍منزلہ عمارت میں جو لفٹ لگائی گئی ہے، اس کی رفتار ایک ہزار میٹر فی منٹ ہے، یہ رفتار امریکا کے ٹوئن ٹاور میں لگائی گئی لفٹ کی رفتار سے دگنی ہے۔ (بشکریہ: ہفت روزہ ’’ٹائم‘‘۔ ۵ مارچ ۲۰۱۲ء) ٭ بچوں کے لیے امریکی ٹی وی سیریلSesame Street کی طرز پر اردو میں ’’سِم سِم ہمارا‘‘ کے نام سے ایک پروگرام تیار اور پیش کرنے کے لیے USAID کی جانب سے ۵ سال کے لیے ۲۰ ملین ڈالر (ایک ارب اسّی کروڑ روپے) کی امداد دی گئی ہے۔ ’’سِم سِم ہمارا‘‘ پاکستانی بچوں کی ’’ذہن سازی‘‘ کے لیے ایک معروف پاکستانی چینل سے عنقریب نشر ہونے والا ہے۔ ٭ ۱۹۹۹ء سے ۲۰۰۷ء کے دوران پندرہ ہزار امریکی ہیپاٹائٹس سی سے فوت [مزید پڑھیے]

مصر میں نئے دستور کی تیاری فوج کا مداخلت نہ کرنے کا اعلان

December 16, 2011 // 0 Comments

مصر میں نئے دستور کی تیاری کے عمل میں فوج کے فیصلہ کن کردار پر شدید ردعمل کے بعد مسلح افواج پر مشتمل کونسل نے آئین سازی میں مداخلت نہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ عرب ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق عسکری کونسل کے رکن میجرجنرل اللواو شاہین نے اپنے ایک انٹرویو میں کہا کہ آئین ساز کمیٹی کے ارکان کا چناؤ صرف پارلیمنٹ کا کام ہوگا، فوج کی مشاورتی کونسل اور نگراں حکومت کا اس میں کوئی کردار نہیں ہوگا۔ جنرل شاہین نے امید ظاہر کی کہ اخوان المسلمون کا سیاسی بازو ’’حریت و عدالت پارٹی‘‘ مشاورتی کونسل میں شرکت کا بائیکاٹ جلد ختم کرکے کمیٹی میں شامل ہوجائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں میجر جنرل شاہین کا کہنا تھا کہ فوج [مزید پڑھیے]

مصر: اِخوان المسلمون کامیابی کی طرف گامزن

December 1, 2011 // 0 Comments

آمر حسنی مبارک کے خلاف کامیاب انقلاب کے بعد مصر میں ہونے والے پہلے پارلیمانی انتخابات کے پہلے مرحلے میں اخوان المسلمون نے واضح سبقت حاصل کرلی۔ نتائج کے مطابق فریڈم اینڈ جسٹس پارٹی (اخوان المسلمون کاسیاسی ونگ) نے اب تک ۴۷ فیصد ووٹ حاصل کیے ہیں اور وہ پہلے نمبر پر ہے، جبکہ دوسرے نمبر پر سلفی جماعت کی النور تحریک ہے۔ اس طرح اسلامی جماعتوں نے انتخابات کے پہلے مرحلے میں واضح برتری حاصل کر لی ہے۔ سیکولر جماعتوں کے اتحاد نے ۲۲ فیصد ووٹ حاصل کیے ہیں۔ ایک مصری صحافی نے لکھا ہے کہ اخوان کی کامیابی کی وجہ وسیع فلاحی خدمات ہیں، جیتنا نہیں، ہارنا حیرت انگیز ہوتا۔ پیر اور منگل کو پہلے مرحلے میں قاہرہ، اسکندریہ سمیت بعض دیگر علاقوں [مزید پڑھیے]

امریکا کو محفوظ رکھنے کی لاگت

October 1, 2011 // 0 Comments

القاعدہ کے سابق سربراہ اسامہ بن لادن نے ایک بار کہا تھا کہ وہ ایک امریکا کو دیوالیہ کرکے دم لیں گے۔ کسی کو کیا معلوم تھا کہ ایسا ہی ہو رہے گا! دس برسوں کے دوران امریکی خفیہ اداروں اور افواج نے دہشت گردی کی درجنوں کوششیں اور منصوبے ناکام بنائے ہیں۔ اس ’’حسن کارکردگی‘‘ کی قیمت پوری امریکی قوم کو ادا کرنا پڑ رہی ہے۔ دہشت گردی ختم کرنے کے نام پر جو کچھ کیا جارہا ہے اس کے نتیجے میں امریکیوں کو اپنی محنت کی کمائی کا بڑا حصہ ادا کرنا پڑ رہا ہے۔ سوال یہ ہے کہ دہشت گردوں سے لڑنے اور امریکا کو ہر حال میں محفوظ رکھنے کی قیمت کیا ہے؟ آئیے، اعداد و شمار کی شکل میں اِس [مزید پڑھیے]

نیو یارک سے نقل مکانی کا رجحان

August 16, 2011 // 0 Comments

نیویارک پوری دنیا کے لوگوں کے لیے باعثِ کشش رہا ہے، لیکن مسلسل دو دہائیوں سے ہوشربا مہنگائی کے باعث یہاں سے لاکھوں لوگوں نے نقل مکانی کی ہے۔ دی ایمپائر سینٹر فار نیویارک اسٹیٹ پالیسی نے ایک رپورٹ میں بتایا ہے کہ نیو یارک اب زیادہ لوگوں کے لیے پرکشش نہیں رہا۔ جو لوگ اس شہر میں روزگار اور رہائش کے لیے آتے ہیں وہ چند ہی ماہ میں پریشان ہوکر واپس چلے جاتے ہیں۔ ایک طرف تو مکانات کے کرائے زیادہ ہیں اور دوسری طرف اس شہر میں روزگار کے مواقع بھی پہلے سے نہیں۔ مہنگائی نے مکینوں کی کمر توڑ دی ہے۔ مسلسل دو عشروں کے دوران نیو یارک سے نقل مکانی کا سلسلہ جاری رہا ہے۔ ۱۹۷۰ء کے عشرے کے بعد [مزید پڑھیے]

مختصر مختصر

July 16, 2011 // 0 Comments

پاکستانی کیا چاہتے ہیں؟ اگر ایک بین الاقوامی سروے ایجنسی کی رپورٹ پر اعتبار کیا جائے تو ۶۷ فیصد پاکستانی شہری پاکستانی سوسائٹی کے ’’اسلامائزیشن‘‘ کے حق میں ہیں۔ یہ سروے گیلپ انٹرنیشنل کے پاکستان چیپٹر نے کیا ہے۔ ایجنسی نے چاروں صوبوں کے شہری اور دیہی علاقوں میں ۷۳۸,۲؍افراد سے ایک سوالنامے کی بنیاد پر بات چیت کی۔ ان میں مرد و خواتین دونوں شامل تھے۔ ایک اہم سوال یہ تھا کہ کیا حکومت پاکستان کو پاکستانی معاشرے کو ’’اسلامیانے‘‘ کے لیے مؤثر اقدامات کرنے چاہییں؟ ۶۷ فیصد نے اثبات میں جواب دیا، صرف ۱۳ فیصد کا خیال تھا کہ اس کی کوئی ضرورت نہیں، جب کہ ۲۰ فیصد نے کوئی جواب نہیں دیا، یعنی ان کی کوئی رائے نہیں تھی۔ ایجنسی کے مطابق [مزید پڑھیے]

حماس کرپشن سے پاک مقبول عوامی جماعت ہے!

May 16, 2011 // 0 Comments

اسرائیل کے فلسطینی اسلامی تحریک مزاحمت ’’حماس‘‘ کے امور کے ماہر اور سیاسی تجزیہ نگار پروفیسر شائول مشعل نے کہا ہے کہ فلسطین میں انتخابات چاہے ایک دن کے اندر ہوں یا ایک سال بعد ہوں، ہر صورت میں اکثریت کے ساتھ کامیاب ہونے والی جماعت صرف حماس ہوگی۔ صہیونی تجزیہ نگار کا کہنا ہے کہ حماس کا دامن کرپشن اور بدعنوانی کی آلودگی سے پاک ہے۔ مرکز اطلاعات فلسطین کے مطابق صہیونی تجزیہ نگار نے حال ہی میں ’’یافی صہیونی اسٹڈی سینٹر ‘‘ کے زیراہتمام ایک تفصیلی رپورٹ شائع کی ہے جس میں فلسطین میں انتخابی سیاست میں کامیاب اور ناکام ہونے والی سیاسی جماعتوں کا مفصل احوال بیان کیاگیا ہے۔ صہیونی تجزیہ نگار لکھتے ہیں کہ محمود عباس اور ان کی جماعت کی [مزید پڑھیے]

جماعت اسلامی ہند کے رہنما مولانا محمد شفیع مونس انتقال کر گئے!

May 1, 2011 // 0 Comments

جماعت اسلامی ہند کے بزرگ و مرکزی رہنما مولانا محمد شفیع مونس کا ۶ اپریل کو ظہر کے وقت انتقال ہوگیا۔ ۹۳ سالہ بزرگ رہنما ۱۹۱۸ء میں ضلع مظفر نگر اتر پردیش میں پیدا ہوئے تھے۔ ۱۹۴۴ء سے ہی جماعت سے وابستہ ہو گئے تھے۔ مولانا محمد شفیع مونس نے ابتدائی دور میں غازی آباد اور اینگلو عربک اسکول دہلی میں بطور استاد خدمات انجام دیں۔ لیکن بعد میں وہ ملیح آباد اور پھر رام پور میں مرکزی درسگاہ جماعت اسلامی سے وابستہ رہے۔ مونس صاحب اپنی طویل تحریکی زندگی میں جماعت اسلامی کے تمام اہم مناصب پر فائز کیے جاتے رہے۔ نائب امیر جماعت، قیم (سیکریٹری جنرل)، اترپردیش اور آندھرا پردیش کے امیر حلقہ، مرکزی مجلس شوریٰ اور مجلس نمائندگان وغیرہ کے رکن اور [مزید پڑھیے]

1 2 3 4 7