Abd Add
 

چین میں مزید تبتی باشندوں کی خودکشی

عراق میں ۲۱؍افراد کو پھانسی

عراق میں ایک ہی دن ۲۱؍افراد کو پھانسی دے دی گئی۔ وزارتِ انصاف کے ترجمان حیدر السعدی کے مطابق ان افراد کو دہشت گردی کے جرم میں پھانسی دی گئی ہے جن میں تین خواتین بھی شامل ہیں۔ وزارتِ انصاف کے عہدیدار نے بتایا کہ ان افراد کو ۲۷؍اگست ۲۰۱۲ء کو سزائے موت دی گئی۔ عراق میں رواں سال ۹۱؍افراد کو پھانسی دی جا چکی ہے۔ اقوامِ متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق نے رواں سال کے ابتدا میں عدالتی کارروائی میں شفافیت کی کمی پر تنقید کرتے ہوئے فوری طور پر پھانسی کی سزا معطل کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

چین میں مزید تبتی باشندوں کی خودکشی

چین میں مزید دو تبتی باشندوں نے احتجاجاً خود کو آگ لگا کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر دیا۔ مجموعی طور پر احتجاجاً خودکشی کرنے والے تبتی باشندوں کی تعداد ۵۰ سے زائد ہو گئی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق انسانی حقوق کے ایک گروپ نے بتایا ہے کہ دو کم عمر تبتی باشندوں نے گزشتہ روز خود کو آگ لگا کر خودکشی کی ہے۔ ۱۸؍ اور ۱۷؍ سالہ نوجوان جوڑے کی خودکشی کے بعد ۲۰۰۹ء سے تبت کے چین سے الحاق کے خلاف احتجاجاً خودکشی کرنے والے تبتی باشندوں کی تعداد ۵۱ ہو گئی ہے۔

(بحوالہ: روزنامہ ’’ہندوستان ایکسپریس‘‘ دہلی۔ ۲۹؍اگست ۲۰۱۲ء)

Leave a comment

Your email address will not be published.


*