Abd Add
 

آزاد فلسطینی ریاست

جنرل پرویز مشرف کا ’’ امریکن جیوش کانگریس‘‘ سے خطاب

October 1, 2005 // 0 Comments

صدر جنرل پرویز مشرف نے فلسطینیوں کی خواہشات کے مطابق آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کیلئے پاکستان کی حمایت کا اعادہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل اس دیرینہ تنازعے کے خاتمہ کیلئے جرات کا مظاہرہ کرے۔فلسطین میں امن سے مشرق وسطیٰ کی تاریخ میں المناک باب بند ہوگا۔ دہشت گردی کے بنیادی اسباب کو نظر انداز کرنا حقائق سے آنکھیں چرانے کے مترادف ہے۔ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ پاکستان سوچی سمجھی اور جامع الگ الگ حکمت عملی کے ذریعہ انتہا پسندی اور دہشت گردی کے مسئلے سے نمٹ رہا ہے۔ ہم نے دہشت گرد اور انتہاپسند عناصر پر مکمل غلبہ پانے تک اس کوشش کو جاری و ساری رکھنے کا عزم کر رکھا ہے۔ انہوں [مزید پڑھیے]

افریقا کی غربت

July 16, 2005 // 0 Comments

افریقا کی غربت ٭ G-8 ممالک کے سربراہوں کے حالیہ اجلاس نے بالآخر افریقا کی غربت دور کرنے کے لیے دی جانے والی امدادی رقم کو دوگنا کر کے ۵۰ بلین ڈالر سالانہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ٭ اس اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ ایک ’’آزاد فلسطینی ریاست‘‘ کی تشکیل کے لیے ۳ بلین ڈالر دیے جائیں گے۔ (بِلین کا مطلب پورا ایک ارب ہے)۔ ٭ چین کے سرکاری پریس کے مطابق چین امریکا باہمی تجارت میں امسال ۱۰۰ بلین ڈالر کی اضافی آمدنی (Surplus) چین کے حصے میں آئے گی۔ ٭ امریکا کے نیشنل کائونٹر ٹیرراِزم سینٹر کے مطابق سال ۲۰۰۴ء میں ’’دہشت گردانہ حملوں‘‘ کی تعداد ۳۱۹۲ تھی۔ ٭ اس رپورٹ کے مطابق ان حملوں میں ۴۳۳,۲۸ افراد زخمی‘ اغوا یا ہلاک [مزید پڑھیے]

نئے یہودیوں کو اسرائیل میں بسانے کا منصوبہ

November 16, 2004 // 0 Comments

کیمپ ڈیوڈ اور اوسلو کے نام نہاد ’’امن معاہدوں‘‘ پر بغلیں بجانے والے اور اسے ’’آزاد فلسطینی ریاست‘‘ کے قیام کا پہلا زینہ قرار دینے والے بھلے ہی اپنی زبان سے اعتراف نہ کریں لیکن قیامِ انصاف کے بغیر قیامِ امن کی نام نہاد کوششوں کے ڈرامے کا حشر وہ بھی بچشمِ سر دیکھ رہے ہیں۔ چشمِ بصیرت سے تو وہ محروم ہیں ورنہ کیمپ ڈیوڈ کے وقت ہی انہیں وہ سب نظر آجاتا جو آج ربع صدی بعد نظر آرہا ہے۔ یروشلیم اعلانیہ اکتوبر ۲۰۰۳ء نے ثابت کر دیا ہے کہ آزاد فلسطینی ریاست کبھی اسرائیل کے ایجنڈے پر تھی ہی نہیں۔ صیہونیت نے اتنے پاپڑ اس لیے تھوڑی بیلے تھے کہ دو ہزار سال کی دربدری کے بعد جس زمین پر انہیں بالجبر [مزید پڑھیے]