Abd Add
 

اسرائیل

دشمنوں کو قتل کرنے کے ’نئے طریقے‘

April 1, 2018 // 0 Comments

یورپ سے زیادہ یہ بات کون جانتا ہے کہ سیاسی بنیاد پر کیا جانے والا کوئی قتل عالمی جنگ بھی چھیڑ سکتا ہے۔ ۱۹۱۴ء میں سربیا کے ایک قوم پرست کے ہاتھوں آرک ڈیوک پر چلائی جانے والی گولی نے پہلی جنگِ عظیم کا باعث بننے کی ’’سعادت‘‘ حاصل کی اور اِسی جنگ کی کوکھ سے دوسری جنگ عظیم نے جنم لیا۔ ۱۸۸۱ء میں روس کے زار نکولس دوم پر پھینکے جانے والے بم نے اصلاحات کا عمل روک دیا۔ سیاسی قتل بڑے پیمانے پر خرابیاں پیدا کرنے کا باعث بنتے رہے ہیں۔ اس کی بھاری یا ہلکی قیمت ہر قوم کو چکانا پڑتی ہے۔ ۱۹۶۱ء میں کانگو کے وزیر اعظم پیٹرس لمومبا کے قتل نے ملک کو تباہی کے راستے پر ڈال دیا۔ اس [مزید پڑھیے]

ٹرمپ اور اسرائیل: خطرناک ملاپ!

March 1, 2017 // 0 Comments

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کا سب سے خطرناک پہلو یہ نہیں تھا کہ انہوں نے دو ریاستوں پر مبنی حل کو تَرک کردیا بلکہ خطرناک پہلو یہ تھا کہ انہوں نے انتہائی بے پروائی، لاتعلقی اور غیر ذمہ داری اپناتے ہوئے اس نظریے سے دستبرداری اختیار کی۔ ان کا تمسخرانہ لب و لہجہ، ٹوٹے پھوٹے الفاظ اور متعلقہ مسئلے سے ان کی عیاں صَرف نظر انتہائی خطرناک نوعیت کی حامل تھی۔ انہوں نے کہا ’’میں دو ریاستوں پر مبنی حل کے علاوہ یک ریاستی حل کی طرف بھی دیکھ رہا ہوں اور مجھے وہ حل پسند ہے جسے دونوں فریق پسند کرتے ہیں‘‘۔ یہ کہتے ہوئے انہوں نے یہ اہم حقیقت نظرانداز کردی کہ کس طرح اسرائیلی اور فلسطینی ایک [مزید پڑھیے]

سلامتی کونسل کی قراردادوں کا طویل سلسلہ

February 1, 2017 // 0 Comments

سلامتی کونسل نے فلسطین میں یہودی آبادکاری کی ایک نئی قرارداد منظور کی جس میں فلسطین میں یہودی آبادکاری کو باطل قرار دیا۔ فلسطین میں اسرائیل کے ناجائز قبضے کے خلاف سلامتی کونسل کی یہ پہلی قرارداد نہیں۔ اب تک اقوام متحدہ کی جانب سے ۱۰؍ایسی ہی قراردادیں منظور کی جاچکی ہیں۔ مرکز اطلاعات فلسطین نے ایک رپورٹ میں اقوام متحدہ کی فلسطین میں اسرائیل کے ناجائز قبضے کے خلاف ماضی میں منظور کردہ دیگر قراردادوں پر مختصر روشنی ڈالی ہے۔ ان قراردادوں کے اہم نکات کیا تھے؟ ان پر کتنا عمل درآمد ہوا اور فلسطینیوں کو ان قراردادوں سے کتنا فائدہ پہنچا ہے؟ اس رپورٹ میں ان ہی سوالوں کا تجزیہ کیا گیا ہے۔ اقوام متحدہ میں منظور ہونے والی قراردادوں کے دوران کئی [مزید پڑھیے]

1 2 3 6