Abd Add
 

اسرائیل

اہلِ فلسطین کے ساتھ اسرائیل کی فریب کاریاں

December 1, 2004 // 0 Comments

فلسطین پر اسرائیلی دعویٰ: اسرائیل فلسطین میں اپنی ریاست کے قیام کی بنیاد جن تین بڑے ماخذوں پر تعمیر کرتا ہے وہ ہیں اول انجیل میں عہدنامہ قدیم کی میراث‘ دوم ۱۹۱۷ء میں حکومت برطانیہ کا اعلان بالفور اور سوم ۱۹۴۷ء میں اقوامِ متحدہ کی جنرل اسمبلی کی سفارش جس میں فلسطین کو عربوں اور یہودیوں میں تقسیم کرنے کے لیے کہا گیا تھا۔ فریب: ہم اپنے قدرتی تاریخی حق کی بنیاد پر۔۔۔ (ہم) یہاں ارض اسرائیل میں ایک یہودی ریاست کے قیام کا اعلان کرتے ہیں یعنی ریاست اسرائیل۔ (۱۹۴۸ء میں اسرائیل کا اعلانِ آزادی) حقیقت: تاریخی لحاظ سے یہودی فلسطین کے قدیم ترین باشندے نہیں ہیں اور نہ ہی انہوں نے وہاں اتنا عرصہ حکومت کی جتنی کہ کئی دوسری اقوام نے۔ جدید [مزید پڑھیے]

نئے یہودیوں کو اسرائیل میں بسانے کا منصوبہ

November 16, 2004 // 0 Comments

کیمپ ڈیوڈ اور اوسلو کے نام نہاد ’’امن معاہدوں‘‘ پر بغلیں بجانے والے اور اسے ’’آزاد فلسطینی ریاست‘‘ کے قیام کا پہلا زینہ قرار دینے والے بھلے ہی اپنی زبان سے اعتراف نہ کریں لیکن قیامِ انصاف کے بغیر قیامِ امن کی نام نہاد کوششوں کے ڈرامے کا حشر وہ بھی بچشمِ سر دیکھ رہے ہیں۔ چشمِ بصیرت سے تو وہ محروم ہیں ورنہ کیمپ ڈیوڈ کے وقت ہی انہیں وہ سب نظر آجاتا جو آج ربع صدی بعد نظر آرہا ہے۔ یروشلیم اعلانیہ اکتوبر ۲۰۰۳ء نے ثابت کر دیا ہے کہ آزاد فلسطینی ریاست کبھی اسرائیل کے ایجنڈے پر تھی ہی نہیں۔ صیہونیت نے اتنے پاپڑ اس لیے تھوڑی بیلے تھے کہ دو ہزار سال کی دربدری کے بعد جس زمین پر انہیں بالجبر [مزید پڑھیے]

۱۰۵ فلسطینی جاں بحق

November 1, 2004 // 0 Comments

اسلحہ واپس لینے کی مہم ☼ اسلحہ واپس لینے کی امریکی فوج اور عراقی حکومت کی ۵ روزہ مشترکہ مہم کے دوران ایک مارٹر گولے کے عوض عراقیوں کو گیارہ امریکی ڈالر ادا کیے گئے۔ ☼ خودکشی کے دو معاہدے جن کے تحت جاپان میں گذشتہ ہفتے ۹ اشخاص نے اپنے آپ کو ہلاک کر لیا وہ انٹرنیٹ کے ذریعہ طے پائے تھے۔ ☼ سنگاپور کے ۴۰ ہزار ٹیکسی ڈرائیوروں کو پولیس نے دہشت گردوں پر نظر رکھنے کی ہدایت کی ہے۔ ☼ سنگاپور میں ۲۰۰۲ء سے اب تک ۴۰ ایسے جنگجو گرفتار کیے جاچکے ہیں جن کا مبینہ تعلق القاعدہ سے ہے۔ ☼ ایک تازہ سرکاری رپورٹ کے مطابق چین میں سال ۲۰۰۲ء میں ۶ کروڑ بالغ افراد موٹاپے کے مرض میں مبتلا ہیں۔ [مزید پڑھیے]

اسرائیل کے جوہری ہتھیار عالمی امن کے لیے خطرہ ہیں!

October 16, 2004 // 0 Comments

ابھی جبکہ اسرائیل کے جوہری اسلحوں کا ذخیرہ عالمی امن کے لیے خطرہ ہونے کے سبب متنازعہ بنا ہوا ہے کہ صیہونی حکومت کے جوہری اسلحوں کے پروگرام کے حوالے سے کچھ نئے انکشافات سامنے آئے ہیں۔ اسرائیلی تحقیق کار Ronen Bergman نے حال ہی میں ایک کتاب لکھی ہے جو مقبوضہ فلسطین میں “Time of Accident” کے نام سے شائع ہوئی ہے۔ اس کتاب میں مصنف نے صیہونی حکومت کے اُن فیصلوں کا انکشاف کیا ہے جو عرب ممالک کے خلاف جوہری اسلحوں کے استعمال سے متعلق گذشتہ سالوں میں کیے گئے ہیں۔ کتاب کے اہم اقتباسات گذشتہ ہفتے اسرائیلی روزنامہ “Yediot Aharnot” میں بھی شائع ہوئے ہیں۔ برگ مین کے مطابق ۱۹۷۳ء میں اس وقت کے وزیرِ دفاع موشے دایان اسرائیلی فوج کے [مزید پڑھیے]

امریکا اور اسرائیل حالات کو بد سے بدتر بنا رہے ہیں!

October 16, 2004 // 0 Comments

توقع کے عین مطابق ہر گزرے دن کے ساتھ عالمی اسٹیج پر ہونے والے ڈرامائی واقعات کی رفتار تیز ہوتی جارہی ہے اور لگتا ہے کہ امریکا کے صدارتی انتخابات سے قبل اگلے تین ہفتوں میں اس پردۂ زنگاری سے بہت کچھ نمودار ہونے والا ہے۔ ہو سکتا ہے اسامہ بن لادن پکڑ لیے جائیں تاکہ بش کی گرتی ہوئی ساکھ کو سہارا ملے یا اسرائیل ایران پر حملہ کر دے لیکن اس وقت جو کچھ ہو رہا ہے اس سے تو بش کے لیے حالات بد سے بدتر ہوتے دکھائی دے رہے ہیں۔ ایک طرف امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کی تازہ رپورٹ نے جارج بش اور ان کے حواریوں کو پوری دنیا کے سامنے ان کے اصل مکروہ حیثیت کو برہنہ کر [مزید پڑھیے]

1 4 5 6