Abd Add
 

بشارالاسد

ایئرمارشل حافظ الاسد سے ڈاکٹر بشارالاسد تک

March 16, 2013 // 0 Comments

حافظ الاسد نے ۱۹۴۶ء میں (مسیحی رہنما مائیکل ایفلاک کی قائم کردہ) بعث پارٹی میں بطور طالبعلم لیڈر، شمولیت اختیار کی۔ ۵۵۔۱۹۵۰ء: میڈیکل کی تعلیم مہنگی ہونے کے سبب، حافظ الاسد نے حُمص ملٹری اکیڈمی میں داخلہ لیا اور فضائیہ کے پائلٹ کی تعلیم مکمل کی۔ ۶۱۔۱۹۵۸ء: جب مصر، شام اور یمن نے یونائیٹڈ عرب ریپبلک (UAR) کی شکل میں باہم اِدغام کیا تو شام کے بعض بعثی افسروں نے، جو مصر میں جِلاوطنی کی کیفیت سے دوچار تھے، ایک ’’ملٹری کمیٹی‘‘ بنائی جس میں حافظ الاسد بھی شامل تھے۔ اس عمل کا مقصد بالآخر شام میں حکومت پر قبضہ کرنا تھا۔ ۸ مارچ ۱۹۶۳ء: اسی ’’ملٹری کمیٹی‘‘ نے ۷ مارچ ۱۹۶۳ء کو شام کی حکومت سے بغاوت کرکے اقتدار پر قبضہ کا منصوبہ بنایا، [مزید پڑھیے]

شام: اپوزیشن دھڑوں کے اتحاد کا مسئلہ

December 1, 2012 // 0 Comments

دنیا بھر میں حکومتوں کے خلاف اٹھنے والی تحریکیں بہت پیچیدہ معاملہ ہوا کرتی ہیں، مگر شام میں صدر بشار الاسد کے خلاف چلائی جانے والی تحریک سب سے پیچیدہ ہے۔ اب تک یہ طے نہیں ہوسکا ہے کہ اپوزیشن کی قیادت کس کے ہاتھ میں ہوگی۔ ملک بھر میں قتل عام جاری ہے۔ حکومت کی گرفت کمزور پڑ رہی ہے مگر ملک میں سرگرم عمل حکومت مخالف عناصر سے بیرون ملک مقیم رہنماؤں کا رابطہ کمزور ہے یا بالکل نہیں۔ ملک میں سویلین اور فوجی قیادت میں اس حوالے سے رساکشی چل رہی ہے کہ بشارالاسد انتظامیہ کی مکمل ناکامی کی صورت میں ملک کو کون سنبھالے گا۔ شہروں، قصبوں اور دیہاتوں کو کنٹرول کرنا اپوزیشن کے لیے دشوار ہوتا جارہا ہے، کیونکہ کوئی [مزید پڑھیے]

اسلامی عناصر اور عرب دنیا کے آئین

April 16, 2012 // 0 Comments

عرب دنیا میں ۲۰۱۱ء میں بیداری کی لہر اٹھی اور نئی حکومتوں کے قیام کی راہ ہموار ہوئی۔ مگر ایک خوف بھی پیدا ہوا کہ اگر کہیں پرانی آمریتیں چلی گئیں اور اسلامی عناصر کی شکل میں نئی آمریتیں اٹھ کھڑی ہوئیں تو؟ شام میں اقلیتیں اس قدر خوفزدہ ہیں کہ انہوں نے اکثریت پر مظالم ڈھانے کو بھی برداشت کرلیا ہے۔ سیکولر ازم کو بچانے کے نام پر سبھی کچھ روا سمجھ لیا گیا ہے۔ مصر اور تیونس میں کچھ کچھ ایسا ہی خوف پایا جاتا ہے۔ ان دونوں ممالک میں نئے آئین کی تشکیل پر زور دیا جارہا ہے تاکہ کوئی بھی نیا نظام من مانی نہ کرسکے۔ ان تینوں ممالک میں اسلامی عناصر نے خاصے مختلف انداز سے معاملات کو نپٹایا اور [مزید پڑھیے]