Abd Add
 

محمود عباس

غرب اردن۔۔۔ سلام فیاض کے بعد!

May 1, 2013 // 0 Comments

فلسطینی اتھارٹی کے وزیراعظم سلام فیاض نے ۱۳؍اپریل کو استعفیٰ دے دیا۔ یہ استعفیٰ حماس اور فتح گروپ کے درمیان امن معاہدے کی راہ ہموار کرسکتا ہے۔ سلام فیاض کے استعفے کو فلسطینی علاقوں میں امن کے قیام کے حوالے سے ایک اور دھچکا ہی قرار دیا جاسکتا ہے۔ سلام فیاض آئی ایم ایف کے افسر رہ چکے تھے۔ ایم بی اے کے ساتھ ساتھ انہوں نے معاشیات میں پی ایچ ڈی بھی کر رکھی ہے۔ کسی زمانے میں وہ سینٹ لوئی فیڈرل ریزرو فنڈ سے وابستہ تھے۔ مغربی سفارت کاروں کو سلام فیاض سے رابطے میں آسانی تھی اور بات سمجھانے میں دیر نہیں لگتی تھی۔ انہوں نے فلسطینی اتھارٹی کے ملٹری بینڈز کو ختم کرکے اردن سے تربیت یافتہ آٹھ بٹالینز تعینات کیں۔ [مزید پڑھیے]

فلسطینی دھڑوں میں اتحاد ہوسکتا ہے؟

December 16, 2011 // 0 Comments

فلسطینی دھڑوں میں صلح کی بات چیت ایک بار پھر خبروں میں ہے۔ سوال یہ ہے کہ کیا واقعی کوئی مثبت نتیجہ برآمد ہوسکے گا؟ اگر سب کچھ درست چلتا رہا تو بہت جلد فلسطین کو، کم از کم دستاویز اور نظریے کی حد تک، دو بلاکس کی شکل میں متحد ہو جانا چاہیے۔ غزہ کی پٹی پر اسلامی تحریک حماس کی حکمرانی ہوگی اور غرب اردن پر فلسطینیوں کی سیکولر قومی تحریک فتح کا تصرف ہوگا۔ حماس کے سربراہ خالد مشعل اور فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے ۲۴ نومبر کو مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں ملاقات کی۔ ملاقات کا مقصد مئی میں انجام پانے والے ایک معاہدے کے تحت عبوری حکومت کے قیام کے معاملے کو حتمی شکل دینا، انتخابات کی تاریخ [مزید پڑھیے]