Abd Add
 

مغربی دنیا

مصر: مغربی نقطۂ نظر سے۔۔۔

August 16, 2012 // 0 Comments

تھوماس ایل فرائیڈمین… حالات حاضرہ کے ایک امریکی مبصر ہیں، ان کے تبصرے نیویارک ٹائمز میں بھی شائع ہوتے ہیں۔ انہوں نے مصر میں اخوان المسلمون کے رہنما ڈاکٹر محمد مرسی کے انتخاب پر لکھا کہ جو لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ اس انتخاب سے وہاں راتوں رات تبدیلی آجائے گی اور شہریوں کی تمام جمہوری امنگیں پوری ہو جائیں گی، وہ سادہ لوح ہیں لیکن وہ لوگ بھی اندھے اور بہرے سمجھے جائیں گے جن کا خیال ہے کہ فوجی آمریت کے جانے اور جمہوریت کے آنے سے شہریوں کی حالت میں کوئی خاص تبدیلی واقع نہیں ہوگی۔ واقعہ یہ ہے کہ یہ بہت بڑی تبدیلی ہے جسے ہر کسی کو تسلیم کرنا ہوگا۔ اس تبدیلی کے اثرات گردوپیش کی مملکتوں پر یقینا پڑیں [مزید پڑھیے]

تعمیرِ معاشرہ میں حائل مشکلات اور حل

May 1, 2012 // 0 Comments

دنیا بھر میں مسلمان معاشرے کی صالح خطوط پر تعمیر کے لیے بہت سے مخلص افراد کوشش کررہے ہیں۔ ہمارے ملک میں بھی یہ کوششیں جاری ہیں۔ ہر جگہ تعمیرِ نو کے اس کام میں متعدد دشواریاں حائل ہیں۔ ہمارے ملک کے سیاق میں درپیش بعض دشواریوں کا ذکر ایک تحریر میں کیا گیا ہے، جو اِس موضوع پر ہمیں موصول ہوئی ہے۔ زیرِ نظر سطور میں ان دشواریوں کے سلسلے میں گفتگو کی جائے گی۔ مغربی کلچر کے اثرات کا مسئلہ مذکورہ تحریر میں کہا گیا ہے: ’’مسلم نوجوان (خواہ لڑکیاں ہوں یا لڑکے) مغربی تہذیب وثقافت کے زیرِاثر آتے جارہے ہیں۔ ان کا تعلق دین سے کمزور ہوتا جارہا ہے۔ طلبہ کی اسلامی تنظیموں کی مساعی سے اس فساد کا ازالہ نہیں ہوپارہا [مزید پڑھیے]

چین۔۔۔ پاکستان سے دور رہنے پر مجبور!

October 16, 2011 // 0 Comments

امریکا سے بگڑتے ہوئے تعلقات نے پاکستان کو مجبور کردیا ہے کہ چین سے تعلقات مزید مستحکم کیے جائیں اور امریکا سمیت پوری مغربی دنیا کو یہ پیغام دیا جائے کہ اگر اُسے الگ تھلگ کردیا گیا یا امتیازی سلوک کا نشانہ بنایا گیا تو چین کا آپشن موجود ہے۔ امریکی پالیسی ساز بھی صورت حال کی نزاکت کو سمجھتے ہیں اِس لیے کسی بھی طرح کی غیر معمولی سفارتی اور عسکری مہم جوئی کے موڈ میں نہیں۔ اُنہیں اندازہ ہے کہ پاکستان نے اِس اہم مرحلے پر امریکا اور افغانستان کا ساتھ چھوڑا تو افغانستان سے امریکا اور اس کے اتحادیوں کی افواج کا بحفاظت نکلنا انتہائی دشوار ہو جائے گا۔ سوال یہ ہے کہ چین کیا چاہتا ہے؟ کیا وہ اس پوزیشن میں [مزید پڑھیے]

مغرب نے دہرا معیار اپنا رکھا ہے!

September 16, 2010 // 0 Comments

پاکستان کے جوہری پروگرام کے بانی اور مرکزی کردار ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے ۲۰۰۴ء میں ٹیلی وژن پر اعتراف کیا تھا کہ انہوں نے ایران، شمالی کوریا اور لیبیا کو جوہری ٹیکنالوجی فراہم کی۔ اعتراف کے بعد انہوں نے خاصی خاموش زندگی بسر کی ہے۔ وہ تقاریب میں شرکت سے گریز کرتے ہیں۔ میڈیا پر انہیں کم ہی دیکھا جاسکتا ہے۔ اپنے ملک میں ہیرو اور بیرون ملک عالمی سلامتی کے لیے خطرہ سمجھے جانے والے ڈاکٹر عبدالقدیر خان سے فصیح احمد نے ای میل کے ذریعے انٹرویو کیا ہے۔ o پاکستان کے جوہری اثاثوں کو اسلامی بم قرار دیا جاتا ہے۔ کسی بھی دوسرے اسلامی ملک کے پاس جوہری بم نہیں، تو کیا پاکستانی جوہری اثاثوں کو اسلامی بم قرار دینا درست ہے؟ عبدالقدیر [مزید پڑھیے]

مغربی بنگال کے مثالی مدارس

February 1, 2010 // 0 Comments

گیارہ ستمبر ۲۰۰۹ء کے واقعات کے بعد سے دنیا بھر میں جنوبی ایشیا کے اسلامی مدارس کو شدت پسندوں اور عسکریت پسندوں کی تربیت گاہ اور محفوظ ٹھکانوں کی حیثیت سے بدنام کیا جاتا رہا ہے۔ مغربی دنیا میں لوگ مدرسہ لفظ سنتے ہی خاصے محتاط دکھائی دینے لگتے ہیں۔ ان کے ذہنوں میں یہ بات میڈیا کے ذریعے ٹھونس دی گئی ہے کہ اسلامی مدارس میں صرف شدت پسندی اور انتہا پسندی سکھائی جاتی ہے اور یہ کہ ان مدارس میں تعلیم پانے والے زندگی کے بنیادی تقاضوں کو نبھانے کے قابل نہیں رہتے۔ بھارت کی ریاست مغربی بنگال نے اس حوالے سی غیرمعمولی استثنا کی حیثیت اختیار کر لی ہے۔ اس ریاست کے طول و عرض میں ایسے اسلامی مدارس موجود ہیں جن [مزید پڑھیے]

1 2