Abd Add
 

ہندوستان

بھارت: شُدھی (تبدیلیٔ مذہب) کا پروگرام جاری ہے!

January 1, 2015 // 0 Comments

ملک میں تبدیلی مذہب کے معاملے پرجاری تنازع تھمنے کا نام نہیں لے رہا۔ وشواہندو پریشد ایودھیا میں اگلے ماہ ’’گھر واپسی‘‘ کا بڑا پروگرام منعقد کرنے جارہی ہے جس میں چار ہزار مسلمانوں کو ہندو بنانے کا منصوبہ ہے۔ پروگرام بی جے پی کے سابق ایم پی رام ولاس ویدانتی کرا رہے ہیں۔ تاہم انہوں نے ان مسلم خاندانوں کے نام بتانے سے یہ کہتے ہوئے انکار کر دیا کہ ایسا کرنے سے انتظامیہ ان لوگوں کی ’’گھر واپسی‘‘ کو روکنے کی کوشش کرے گی۔

دیندار حضرات میں شرح بیماری کی کمی

October 1, 2005 // 0 Comments

امریکا کی ریسرچ یونیورسٹیوں کے حالیہ جائزہ رپورٹ میں یہ واضح کیا گیا ہے کہ دیندار حضرات میں شرح بیماری کم ہے اور ان کے اندر قوت ِدفاع دوسروں کے بالمقابل زیادہ ہے‘ ہائی بلڈ پریشر کا شکار عمومی طور پر۶۵ سال کی عمر والے حضرات ہوتے ہیں لیکن دیندار حضرات میں یہ تناسب ۴۰ فیصد کم ہے‘ واضح رہے کہ بلڈ پریشر عمومی طور پر دل و دماغ پر اثر انداز ہوتا ہے اور ان حالات میں دماغی رگوں کے پھٹنے کا امکان زیادہ بڑھ جاتا ہے‘ ڈاکٹرہارولڈ کہتا ہے: ’’ہمیں پور ایقین ہے کہ اسلام میں نماز اور دیگر شعائر کی ادائیگی کا حکم ایک مثبت اور درست حکم ہے جس کے بہتر اور صحت افزا اثرات انسانی جسم پر نمودار ہوتے ہیں [مزید پڑھیے]

بھارت کی تازہ عسکریت بھارتی اخبارات کی نظر میں!

September 16, 2005 // 0 Comments

اخبارات کی نظر میں 1۔The Tribune کی رپورٹ: چندی گڑھ سے شائع ہونے والے ’’دی ٹریبیون‘‘ میں ۲۹ جون ۲۰۰۵ء کو شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق (GRSE) گارڈن ریچ شپ بلڈرز اینڈ انجینئرز کی تیار کردہ Fast Attack Craft کو نیوی کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ اس کا وزن ۲۶۰ ٹن ہے اس کی لمبائی ۴۶ میٹر ہے اور اس کی رفتار 28 KNOTS سے متجاوز ہے۔ اس میں جدید ترین CRN-91 گن بھی نصب ہے۔ امید کی جانی چاہیے کہ اس فاسٹ اٹیک کرافٹ سے ’’امن‘‘ کی کوششوں کو جِلا ملے گی۔ ۲۔ Times of India کی رپورٹ: ’’ٹائمز آف انڈیا‘‘ کی ۲۲ جون کی رپورٹ کے مطابق بھارت نے چندی پوری کی (Integrated Test Range) ITR سے صرف پانچ دنوں میں [مزید پڑھیے]

قائداعظمؒ کا ایک بیان

August 16, 2005 // 0 Comments

’’پاکستان کے سوال پر کسی مفاہمت کا امکان نہیں۔ ہندوستان کوئی ایک ملک نہیں ہے۔ میں اپنے آپ کو ہندوستانی تسلیم نہیں کرتا۔ ہندوستان ایک ایسی مملکت ہے جس میں کئی قومیں موجود ہیں۔ ان میں دو بڑی قومیں بھی موجود ہیں۔ ہم صرف اس کے طالب ہیں کہ ہماری قوم کے لیے ایک مکمل آزاد ریاست پاکستان کے نام سے قائم کر دی جائے۔ ہم یہ تسلیم کرتے ہیں کہ ہندوستان میں ڈھائی کروڑ مسلمان رہ جائیں گے مگر اس کا کوئی علاج نہیں۔ ایک متحدہ وفاق کی صورت میں مسلم صوبہ جات بھی جہاں مسلمان ستر فیصد اکثریت میں ہیں‘ ہندوئوں کے قبضے میں آجائیں گے۔ پاکستان میں ان کی حالت ضرور اچھی ہو گی۔ ہندوستان میں اگر ڈھائی کروڑ مسلمان ہوں گے [مزید پڑھیے]

خود احتسابی کا عمل دیانتداری سے انجام دیں

July 1, 2005 // 0 Comments

ڈاکٹر محمد رفعت ہندوستان کے ایک ممتاز دانشور ہیں۔ اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) کے صدر رہ چکے ہیں۔ آج کل بھارت کی مشہور و معروف یونیورسٹی جامعہ ملّیہ اسلامیہ دہلی میں علمِ طبیعیات کے پروفیسر ہیں۔ آپ نے فزکس میں ماسٹرز کی ڈگری علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے حاصل کی اور ڈاکٹریٹ کی ڈگری بھارت ہی کے ممتاز و نامور ادارے Indian Institute of Technology کانپور سے حاصل کی۔ ڈاکٹر محمد رفعت نے اسلامی طلبہ تنظیم میں فعال قائدانہ کردار ادا کرتے ہوئے بھی اپنے روشن تعلیمی کیریئر پر کبھی آنچ نہ آنے دی اور ہمیشہ امتیازی نمبروں سے کامیاب ہوتے رہے۔ اس وقت آپ جماعت اسلامی ہند کی مرکزی مجلسِ شوریٰ کے رکن اور دہلی و ہریانہ کی صوبائی جماعت کے امیر [مزید پڑھیے]

1 2