Abd Add
 

علامہ اقبال

اقبال کے کلام میں ’’جبرئیل‘‘ اور جبریل‘‘ سے ترتیب دیے گئے اشعار کی معنویت

October 1, 2007 // 0 Comments

جبرئیل: قرآن میں حضرت جبرئیل علیہ السلام کا نام صرف جبریل واردہوا ہے۔ لغات کشور ی میں جبرئیل اور جبریل کے علاوہ جبرائیل بھی ہے معنی مقرب و مشہور فرشتے۔ اور ڈاکٹر مولوی عبدالحق کی اردو انگلش ڈکشنری میں صرف جبریل اور جبرائیل ہے۔ مگر سبھوں سے مراد ان لغات میں صرف جبرئیل ؑہیں۔ حضرت جبرئیل ؑ کی ملائکہ میں عظمت کا اندازہ اس سے لگایا جا سکتا ہے کہ جہاں بھی آپؑ کا ذکر قرآن میں وارد ہواہے وہ زیادہ تر ملائکہ سے الگ وارد ہواہے۔ قرآن کی سورۃ النحل کی آیت ۱۰۲ میں حضرت جبرئیل کو ’’روح القدس‘‘ کے لقب سے نوازتے ہوئے رسولr کو مخاطت کر کے فرمایا گیا ہے کہ ان منکروں سے کہو کہ: ’’اسے (قرآن کو ) روح القدس [مزید پڑھیے]

غلامی کے خلاف اقبال کی جدوجہد

June 1, 2007 // 0 Comments

اقبال عمر بھر غلامی کے خلاف سرگرمِ جہاد رہے۔ اشرف المخلوقات کی حیثیت سے وہ انسان کی عظمت اسی میں پاتے ہیں کہ خدا کے سوا وہ کسی کے سامنے سر نہ جھکائے اورنہ کسی ذہنی و عملی غلامی میں مبتلا ہو۔ چنانچہ ’’پیامِ مشرق‘‘ میں غلامی کے عنوان سے ایک نظم میں وہ غلامی کو قبول کرنے والے اور آزادی جیسی نعمتِ عظمیٰ کو مطلق العنان بادشاہوں کے قدموں میں ڈال دینے والے بے بصر انسانوں کو کتوں سے بھی بدتر قرار دیتے ہوئے کہتے ہیں کہ میں نے کسی کتے کو کتے کے آگے سر جھکاتے ہوئے نہیں دیکھا۔ آدم از بے بصری بند گئی آدم کرد گوہرے داشت ولے نذرِ قباد و جم کرد یعنی از خوئے غلامی زِسگان خوار تر است [مزید پڑھیے]

1 2