بنگلا دیش

بنگلادیش گلوبل راڈار سے غائب

November 16, 2016 // 0 Comments

بنگلادیش کو قائم ہوئے کم و بیش ۴۴ سال ہوچکے ہیں مگر اب تک اس کی معیشت اور معاشرت نے مجموعی طور پر وہ کیفیت اختیار نہیں کی ہے، جس کی بنیاد پر کہا جاسکے کہ وہ ایک بھرپور اور کامیاب ملک ہے۔ آیے، شرحِ پیدائش، انسانی وسائل اور میڈیا کی آزادی کے حوالے سے بنگلادیش کے اب تک کے سفر کا جائزہ لیں۔

بنگلادیش کو بہت سے چیلنجوں کا سامنا ہے۔ ایک طرف معیشت کی خرابی ہے اور دوسری طرف معاشرت کی بگڑتی ہوئی کیفیت۔[مزید پڑھیے]

مولانا مطیع الرحمن نظامی شہید سے اہلِ خانہ کی آخری ملاقات

June 1, 2016 // 1 Comment

بنگلادیش کی پارلیمنٹ کے سابق رکن، سابق مرکزی وزیر زراعت، بندرگاہ اور صنعت، بنگلادیش جماعت اسلامی کے امیر، مولانا مطیع الر حمن نظامی کو شیخ مجیب الرحمن کی بیٹی شیخ حسینہ کی سیکولر حکومت نے ۱۰مئی ۲۰۱۶ء کو پھانسی دے دی۔ شہید کے گھر والوں سے الوداعی ملاقات کی تفصیل ملاحظہ کیجیے۔ یہ ملاقات ڈھاکا سینٹرل جیل میں ۱۰مئی کو آٹھ بجے شب کروائی گئی۔ یہ تحریر مولانا کے تیسرے بیٹے ڈاکٹر نعیم الرحمن کی ہے، جو خود اس ملاقات میں موجود تھے۔ ملاقات کے کچھ ہی دیر بعدمولانا کو پھانسی دے دی گئی۔ (ادارہ)[مزید پڑھیے]

مولانا مطیع الرحمن نظامی کی پھانسی پر ڈاکٹر طارق رمضان کا اظہار مذمت

May 16, 2016 // 0 Comments

بنگلادیش کی سب سے بڑی اسلام پسندسیاسی پارٹی کے ۷۳ سالہ بزرگ امیر مولانا مطیع الرحمن نظامی کو ۱۹۷۱ء کی جنگ میں جنگی جرائم اور بغاوت کے بے بنیاد الزامات پر بنگلادیش کی بدعنوان حکومت نے پھانسی کی سزا دی۔ بنگلادیش کی حکومت کے غیر جمہوری رویہ اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر عالمی حکومتوں کی خاموشی تشویشناک ہے۔[مزید پڑھیے]

1 2 3 5