Abd Add
 

تعلیمی نصاب

کیا ’’تَھر‘‘ میں تعلیم کی ڈوبتی کشتی کو کنارہ ملے گا؟

May 16, 2005 // 0 Comments

تھر‘ سندھ کا انتہائی پسماندہ علاقہ ہے جو اپنے معدنی ذخائر کے حوالے سے پورے ملک سمیت دنیا میں مشہور ہے۔ اس علاقے کی تعلیمی صورتحال سوچنے کے لائق ہے۔ تھرپارکر ضلع کے تعلیمی اداروں کے گذشتہ دس سال ۱۹۹۴ء سے ۲۰۰۴ء تک کی خواندگی شرح کی رپورٹ کے مطابق سال ۹۵۔۱۹۹۴ء کے مدمقابل گذشتہ سال ۲۰۰۴ء میں ضلع کا واحد کالج مٹھی میں ۵۷ فیصد طلبا کے داخلوں میں ریکارڈ کمی ہوئی ہے۔ جبکہ اسی طرح دس سال کے مدمقابل سال ۴۔۲۰۰۳ء میں ضلع کے پورے ہائی اسکولوں میں طلبا کے داخلوں میں ۹ فیصد کمی ہوئی ہے۔ اسی طرح اس سے پہلے والے تین سالوں میں ۱۹۹۹ء کے دوران کالج کے طلبا کے داخلوں میں ۷۴ فیصد‘ ۲۰۰۰ء میں ۷۳ فیصد‘ ۲۰۰۱ء میں [مزید پڑھیے]