Abd Add
 

بھارت

سانحہ الٰہ آباد

March 16, 2007 // 0 Comments

الٰہ آباد میں طالبات کے مدرسہ جامعۃ الصالحات (کریلی) میں ۱۷ جنوری ۲۰۰۷ء کی شب طالبات کے ہاسٹل میں جو قیامت ٹوٹی اس نے ملک کے سیکوریٹی نظام اور شہریوں،حقوق بالخصوص مسلمانوں و اقلیتوں کے بنیادی حقوق کی دھجیاں بکھیر دی ہیں۔ یہ کہنا درست نہیں کہ جن چھ افراد نے نوخیز طالبات کے ہاسٹل پر حملہ کیا وہ عام قسم کے بدمعاش تھے۔ مسلم سماج کے خلاف یہ ایک منظم سازش تھی اور اس گھنائو نے جرم میں وہ سفید پوش لوگ ملوث تھے جو ہندوستان کی ثقافتی اصطلاح میں ’’ان داتا‘‘ کہے جاتے ہیں۔ اس جرم کے مرتکب چھ افراد پولیس (CID) کے بھیس میں تھے اورکہا جا تا ہے کہ وہ ’’روٹین چیکنگ‘‘ کے نام پر وہاں جاتے رہے ہیں۔ یہ سوال [مزید پڑھیے]

بھارتی نوجوان مَرد

December 16, 2006 // 0 Comments

بھارتی انگریزی جریدہ ’’انڈیا ٹوڈے‘‘ کے ذریعہ کیے گئے ایک سروے میں بھارتی نوجوان مَردوں کی ۴۹ فیصد تعداد نے بتایاکہ وہ طوائف کے ساتھ ہم خواب ہوتے ہیں

وندے ماترم تنازعہ

September 1, 2006 // 0 Comments

وندے ماترم ایک بنگالی شاعر و ادیب بنکم چندر چٹرجی کی ۱۸۷۶ء میں لکھی نظم ہے۔ نظم میں ملک کو ایک دیوی خیال کرتے ہوئے جہاں اس کی تعریف و توصیف بیان کی گئی ہے‘ وہیں اس کی پرستش کرتے ہوئے اسے ’درگا‘ اور ’کالی‘ قرا ردیا گیا ہے اور دشمن کو نیست و نابود کرنے کے عزائم بھی ظاہر کر دیے گئے ہیں۔

بھارت کی تازہ عسکریت بھارتی اخبارات کی نظر میں!

September 16, 2005 // 0 Comments

اخبارات کی نظر میں 1۔The Tribune کی رپورٹ: چندی گڑھ سے شائع ہونے والے ’’دی ٹریبیون‘‘ میں ۲۹ جون ۲۰۰۵ء کو شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق (GRSE) گارڈن ریچ شپ بلڈرز اینڈ انجینئرز کی تیار کردہ Fast Attack Craft کو نیوی کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ اس کا وزن ۲۶۰ ٹن ہے اس کی لمبائی ۴۶ میٹر ہے اور اس کی رفتار 28 KNOTS سے متجاوز ہے۔ اس میں جدید ترین CRN-91 گن بھی نصب ہے۔ امید کی جانی چاہیے کہ اس فاسٹ اٹیک کرافٹ سے ’’امن‘‘ کی کوششوں کو جِلا ملے گی۔ ۲۔ Times of India کی رپورٹ: ’’ٹائمز آف انڈیا‘‘ کی ۲۲ جون کی رپورٹ کے مطابق بھارت نے چندی پوری کی (Integrated Test Range) ITR سے صرف پانچ دنوں میں [مزید پڑھیے]

جماعت اسلامی ہند: سیاست میں سرگرمِ عمل ہونے کو ہے!

September 1, 2005 // 0 Comments

ڈاکٹر محمد نجات اﷲ صدیقی بین الاقوامی شہرت کے ماہر اقتصادیات اور معروف اسکالر ہیں‘ وہ اسلامی تحریکوں کے فکری قائد ہیں۔ دہلی سے شائع ہونے والے ہفت روزہ ’’ریڈی اینس‘‘ کے مہتاب عالم سے ایک خصوصی انٹرویو میں انہوں نے بڑی تفصیل کے ساتھ جماعت اسلامی ہند اور اسلامی تحریکوں کو درپیش مسائل پر گفتگو کی ہے۔ ڈاکٹر نجات اﷲ صدیقی پوری دنیا کے مسلمانوں اور اسلامی تحریکات میں ایک نمایاں مقام رکھتے ہیں۔ ان کے افکار و نظریات سے اختلاف کیا جاسکتا ہے‘ لیکن ان کی علمی بصیرت اور دینی خدمات کے بارے میں دورائے نہیں ہو سکتیں۔ پاکستان کے حالات میں ڈاکٹر صاحب کے خیالات پوری طرح فٹ نہیں بیٹھتے لیکن بھارت کے مسلمان جو ہندو جبر کا سامنا کر رہے ہیں‘ [مزید پڑھیے]

صاف پانی میسر نہیں!

August 1, 2005 // 0 Comments

صاف پانی میسر نہیں! ٭ وسیع و عریض قومی بجٹ میں سے صرف ۴۱۲۸ ملین روپے صحت کے لیے مختص ہوئے۔ ٭ ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ رقم کل GDP کا صرف ۳۷۵ء۰ فیصد ہے۔ ٭ گذشتہ بجٹ میں یہ رقم GDP کا ۸۴ء۰ تھی۔ ٭ ۲۰۰۴ء کے اقتصادی سروے کے مطابق: ۱۰۷,۲۵ افراد کے لیے صرف ایک ڈاکٹر۔ ۱۲۷,۶ ڈینٹسٹ۔ ۴۴۶,۴۸ تربیت یافتہ نرسیں۔ ملک بھر میں ۹۱۶ سرکاری اسپتال۔ ۵۴۴ دیہی صحت کے مراکز۔ ۵۳۰ بنیادی صحت کے یونٹ۔ ۵۸۲,۴ ڈسپنسریاں۔ ٭ اقوامِ متحدہ کے ترقیاتی پروگرام U.N.D.P. کی سالانہ رپورٹ کے مطابق: پاکستان‘ علاقے کے دوسرے ممالک کے مقابلے میں سب سے پیچھے ہے۔ پاکستان میں اوسط عمر تقریباً ۶۱ سال جبکہ بھارت میں ۹ء۶۳ اور بنگلہ دیش میں ۶ء۶۱ سال [مزید پڑھیے]

خود احتسابی کا عمل دیانتداری سے انجام دیں

July 1, 2005 // 0 Comments

ڈاکٹر محمد رفعت ہندوستان کے ایک ممتاز دانشور ہیں۔ اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) کے صدر رہ چکے ہیں۔ آج کل بھارت کی مشہور و معروف یونیورسٹی جامعہ ملّیہ اسلامیہ دہلی میں علمِ طبیعیات کے پروفیسر ہیں۔ آپ نے فزکس میں ماسٹرز کی ڈگری علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے حاصل کی اور ڈاکٹریٹ کی ڈگری بھارت ہی کے ممتاز و نامور ادارے Indian Institute of Technology کانپور سے حاصل کی۔ ڈاکٹر محمد رفعت نے اسلامی طلبہ تنظیم میں فعال قائدانہ کردار ادا کرتے ہوئے بھی اپنے روشن تعلیمی کیریئر پر کبھی آنچ نہ آنے دی اور ہمیشہ امتیازی نمبروں سے کامیاب ہوتے رہے۔ اس وقت آپ جماعت اسلامی ہند کی مرکزی مجلسِ شوریٰ کے رکن اور دہلی و ہریانہ کی صوبائی جماعت کے امیر [مزید پڑھیے]

1 3 4 5 6