Abd Add
 

ایران امریکا تعلقات

ایٹمی پروگرام، ایران کو کیسے روکیں؟

July 1, 2019 // 0 Comments

قریباً چار سال سے ایران کی جانب سے ایٹمی اسلحہ تیار کرنے کی سرگرمیاں روک دی گئی ہیں۔ ایران نے امریکا اور دیگر طاقتوں سے۲۰۱۵ء میں ایک معاہدہ کیا تھا، جس کے تحت اس کے ایٹمی پروگرام کوپُرامن یا غیر عسکری مقاصد (civilian uses) جیسے پیداوارِ توانائی (power-generation) کے حصول تک محدود کردیاگیا تھا۔ ایران میں نیوکلیائی سرگرمیوں کا پتا چلانے کے لیے جو اقدامات کیے گئے، اس حوالے سے ایران کو معائنے کے لیے سخت ترین حکومت (toughest inspection regime) کہا گیا۔ ماہرین اس بات پر متفق ہیں کہ ایران معاہدے کی تعمیل کررہا ہے اور اس کی نیوکلیائی سرگرمیاں محدود ہیں۔لیکن صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اس نیوکلیائی معاہدے کو ختم کردیا، جس کی وجہ سے ایران نے یورینیم کی افزودگی پھر سے شروع [مزید پڑھیے]

ایران مسائل کی جَڑ، یا اُن کا حل!!

June 1, 2018 // 0 Comments

پچھلے دس سال سے جاری خانہ جنگی اور اس کے نتیجے میں پیدا ہونے والے معاشرتی تغیرات نے خطے میں جنگ عظیم اول سے قائم سیاسی نظام کو پارہ پارہ کر دیا ہے۔جیسے جیسے آمرانہ نظام اپنے انجام کو پہنچے تو ان کے ساتھ ہی قومی ادارے ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو گئے اور ان ممالک کی عالمی سرحدیں بھی متاثر ہوئیں۔ شام اور یمن خونی خانہ جنگی کا شکار ہو چکے ہیں اور اس خانہ جنگی کو غیر ملکی فوجی مداخلتوں نے مزید سلگایا ہے۔دوسری طرف امریکا اور اس کی اتحادی فوج کے آپریشن سے قبل ایک دہشت گرد تنظیم داعش، عراق اور شام کے ایک بڑے علاقے پر قبضہ کر چکی تھی۔ ٹرمپ انتظامیہ ،واشنگٹن اور خطے کے دیگر ممالک کے سرکاری حکام [مزید پڑھیے]

اوباما کا مسئلۂ ایران

March 1, 2014 // 0 Comments

اس وقت براک اوباما کا سب سے بڑا مسئلہ یہ ہے کہ امریکا میں رائے عامہ ایران کے حوالے سے تقسیم ہوچکی ہے۔ حکومتی اور پارلیمانی حلقوں میں ایران پر بحث شدت اختیار کرگئی ہے۔ کانگریس میں اس حوالے سے واضح طور پر دو کیمپ دکھائی دے رہے ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ امریکی صدر کو ایران کے معاملے میں کانگریس سے زیادہ مدد نہیں مل سکے گی

افغانستان میں امریکا کو شکست نہیں ہونی چاہیے!

December 1, 2009 // 0 Comments

بھارت کے وزیر اعظم من موہن سنگھ نے حال ہی میں امریکا کا سرکاری دورہ کیا ہے۔ اس دورے سے قبل نیوز ویک کے لیے لیلی ویمتھ نے ان سے انٹرویو کیا جس سے بھارت امریکا تعلقات کے مختلف خد و خال اجاگر ہوتے ہیں۔ یہ انٹرویو پیش خدمت ہے: لیلی ویمتھ: مستقبل میں بھارت اور امریکا کے درمیان تعاون کا دائرہ وسیع کرنے کے حوالے سے آپ کے ذہن میں کیا آئیڈیاز ہیں؟ من موہن سنگھ: سویلین ایٹمی ٹیکنالوجی میں تعاون کے حوالے سے بھارت اور امریکا کے درمیان جو معاہدہ ہوا ہے وہ سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔ ہم اس پر عمل کو یقینی بنائیں گے تاکہ معاہدے کے تحت بھارت کو تمام ممکنہ فوائد مل سکیں۔ مجھے امید ہے کہ ہم [مزید پڑھیے]

1 2