Abd Add
 

ایران امریکا تعلقات

امریکا و ایران۔ خلیج میں ایک دوسری کشمکش

September 16, 2007 // 0 Comments

زیادہ تر امریکیوں کی اور بیشتر دنیا کی نظریں عراق میں امریکی بری کمانڈر جنرل ڈیوڈ پیٹروس پر جمی ہوئی ہیں جو آئندہ ہفتے کانگریس کو رپورٹ کرتے ہوئے بیان دینے والے ہیں۔ لیکن اسی اثنا میں ایران کے ساتھ امریکی تعلقات بد سے بدتر ہو گئے ہیں۔ دونوں ممالک ایک دوسرے کے خلاف اہانت آمیز بیانات کا تبادلہ کرتے رہے ہیں لیکن اب یہ دھماکا خیز نکتے پر پہنچ چکے ہیں۔ صدر بش جس قدر عراق میں دھستے چلے جارہے ہیں، اسی قدر وہ اپنی ناکامی کا الزام ایران پر رکھنے میں شدت اختیار کر رہے ہیں۔ ۲۸ اگست کو انھوں نے ایران کو دنیا میں دہشت گردوں کا بہت بڑا حامی ملک قرار دیا اور دعویٰ کیا کہ اس کے جوہری پروگرام کی [مزید پڑھیے]

’’ہماری جوہری سرگرمیاں قانونی ہیں!‘‘

May 1, 2007 // 0 Comments

عالمی خبر رساں ایجنسی رائٹر اور اسپین کے ٹیلی ویژن چینل ’’ٹی وی ای ‘‘ نے گزشتہ دنوں ایرانی صد رمحمود احمد ی نژاد سے انٹرویو لیا جس کے اہم اقتباسات کا ترجمہ نذر قارئیں ہے۔ سوال: جناب صدر، ایران نے یورینیم کی افزودگی معطل کرنے سے انکار کردیاہے اس صورت حال میں ایران کے چیف مذاکرات کار علی لاریجانی ترکی میں یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ ہاوئیرسولانا سے کس بنیاد پر بات چیت کریں گے؟ جواب: ایران کے جوہری پروگرام پر تنازع کی نوعیت مکمل طور پر سیاسی ہے، اس میں قانونی اور تکنیکی امور کا کوئی دخل نہیں۔ ایران نے بین الاقوامی قوانین کی کبھی بھی خلاف ورزی نہیں کی۔ چند(مغربی) ممالک جو سب سے زیادہ نیوکلیئر ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہیں، [مزید پڑھیے]

ایک طاقتور ایران خطے کے مفاد میں ہے!

October 1, 2006 // 0 Comments

ایران ایک طاقتور ملک ہے۔ ایک طاقتور ایران خطے کے لیے فائدہ مند ہے اس لیے کہ ایران ایک ایسا ملک ہے جو گہری ثقافت کا حامل ہے اوریہ ہمیشہ ایک پرامن ملک رہا ہے۔ اگر امریکیوں نے شاہ کو مسلط نہ کیا ہوتا ایران اس سے کہیں زیادہ طاقتور ملک ہوتا۔

محمود احمدی نژاد کا خط صدر جارج بش کے نام

June 1, 2006 // 0 Comments

صدر ریاست ہائے متحدہ امریکا! ادھر کچھ دنوں سے میں یہ سوچ رہا ہوں کہ کوئی شخص ان ناقابلِ تردید تضادات کو کس طرح برحق قرار دے سکتا ہے جو عالمی منظرنامے پر موجود ہیں اور جن پر مسلسل اور متواتر بحث ہو رہی ہے‘ خاص طور سے سیاسی فورموں میں اور یونیورسٹیوں کے طلباء کے درمیان۔ میرے سوالات ہمیشہ جوابات کے لئے تشنہ رہتے ہیں۔ انہی میں سے بعض تضادات اور سوالات نے مجھے اس امر پر آمادہ کیا ہے کہ میں یہ امید لے کر انہیں زیربحث لائوں کہ شاید ان سوالات اور تضادات کے حل کا موقع میسر آئے۔ کیا کوئی شخص اللہ تعالیٰ کے عظیم پیغمبر حضرت عیسیٰ علیہ السلام کا پیروکار ہوسکتا ہے اور کیا کوئی انسانی حقوق کے احترام [مزید پڑھیے]

شاید کہ تیرے دل میں اُتر جائے میری بات!

May 16, 2006 // 0 Comments

موم تو پگھل سکتا ہے‘ پتھر سے پگھلنے کی اُمید بے جا بھی ہو گی اور تضیعِ اوقات بھی۔ یہی وجہ ہے کہ ایرانی صدر احمدی نژاد کے اُس خط سے جو انہوں نے امریکی صدر جارج بش کے نام لکھا ہے اور جس کی خبر کو پوری دنیا کے اخبارات میں اہمیت کے ساتھ شائع کیا گیا۔ یہ امید نہیں کی جاسکتی کہ اس سے جارج بش کے طرزِ فکر اور طریقِ کار میں کوئی تبدیلی رونما ہو گی۔ اس کے باوجود احمدی نژاد نے ضروری سمجھا کہ اس مغرور اور جابر حکمراں کے سامنے چند باتیں اور چند حقائق رکھ دیے جائیں تاکہ اگر اُس میں تھوڑی بہت بھی انسانیت موجود ہے اور وہ روحانی اور انسانی اقدار کے لیے اپنے دل میں [مزید پڑھیے]

1 2