مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودیؒ

ملکوں کے مابین معاہدانہ تعلقات اور عسکری اقدام

March 16, 2014 // 0 Comments

قیامِ پاکستان کے فوراً بعد جہادِ کشمیر کے حوالے سے ایک اہم سوال پیدا ہوا تھا۔ اس وقت ممتاز دینی اسکالر مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودیؒ کا ایک خاص مؤقف تھا، جس پر بعض حلقوں نے خاصا شور مچایا۔ ان پر شدید تنقید کی گئی۔ مگر وہ اپنے علمی مؤقف پر اپنے دلائل کے ساتھ قائم رہے۔ اسی بحث کے تناظر میں ۱۷؍اگست ۱۹۴۸ء کو مولانا مودودی نے سہ روزہ ’’کوثر‘‘ کو ایک تفصیلی انٹرویو دیا، جس میں اس موقف کو پوری صراحت اور وضاحت سے بیان کیا۔ ہم اس تاریخی انٹرویو کو قارئین کے لیے دوبارہ پیش کر رہے ہیں۔ آج کل بھی ہمارے ہاں اِسی طرح کی بحث جاری ہے۔ اِن علمی نکات سے معاملے کی تفہیم میں مدد مل سکتی ہے۔

سیاسی اسلام

January 16, 2014 // 0 Comments

مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودیؒ، جو سیاسی اسلام کو جنم دینے والے دو تین مفکرین میں شمار ہوتے ہیں، اگر آج زندہ ہوتے تو اسلامی دنیا کا سفر کرتے ہوئے انہیں چند معمولی سے خوشگوار اور بہت سے انتہائی ناخوشگوار تجربات کا سامنا ہوتا۔ ان کے انتقال کے بعد آج پاکستان (بالخصوص افغانستان سے ملحق علاقوں میں) اُن کی قائم کردہ جماعتِ اسلامی ایک مٔوثر اور منظم سیاسی قوت ہے۔

ایک غیر مطبوعہ خط

December 1, 2006 // 0 Comments

قائداعظم محمد علی جناح کی وفات (۱۱ ستمبر ۱۹۴۸ء) کے کچھ ہی دنوں بعد ۴؍اکتوبر ۱۹۴۸ء کو سید مودودی کو گرفتار کر کے چھ ماہ کے لیے نظر بند کردیاگیا، بعد ازاں اسی نظر بندی میں توسیع ہوتی رہی۔۔۔ زیرِ نظر خط اس زمانۂ اسیری میں ۶؍اکتوبر ۱۹۴۹ء کا تحریر کردہ ہے۔