Abd Add
 

مشرقِ وسطیٰ

چین سے متعلق امریکی فوجی حکمتِ عملی

July 1, 2012 // 0 Comments

امریکا کے لیے سب سے بڑا مسئلہ چین کے بڑھتے ہوئے اثرات کو روکنا ہے۔ اس سیلاب کے سامنے بند باندھنے کی کوششیں اب تک ملے جلے اثرات کی حامل رہی ہیں۔ امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون نے چین کے خلاف بحری و فضائی جنگ کی سوچ اپنائی ہے مگر ناقدین نے اس میں خامیاں تلاش کی ہیں۔ گزشتہ عشرے کے بیشتر حصے میں دہشت گردی کے خلاف اقدامات نے امریکا میں صنعتی سطح پر مقبولیت حاصل کی اور اس کے نتیجے میں اسٹریٹجک سوچ رکھنے والے بھی متاثر ہوئے ہیں۔ مگر اب دفاعی امور میں ایک نئے فیشن کی آمد ہوئی ہے۔ گزشتہ ماہ سنگاپور میں شنگریلا ڈائیلاگ کے لیے جمع ہونے والے ایشیائی وزرائے دفاع کے سامنے امریکی وزیر دفاع لیون پنیٹا نے ایک [مزید پڑھیے]

حضرت عیسیٰؑ کے زمانے کی زبان کے احیا کی کوشش

June 16, 2012 // 0 Comments

اسرائیل میں دو چھوٹے دیہات کے رہنے والے عیسائی آرمائک (Aramaic) زبان کو دوبارہ زندہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ یہ در اصل ان زبانوں کے احیا کی خواہش کو عملی شکل دینے کی کوشش ہے جو حضرت عیسیٰ علیہ السلام بولا کرتے تھے۔ ان زبانوں کو مشرقِ وسطیٰ سے مِٹے ہوئے بھی صدیاں بیت چکی ہیں۔ جدید ٹیکنالوجی نے صدیوں پہلے اپنا اثر کھو دینے والی زبانوں کے احیا کے مشن کو زندگی بخشی ہے۔ سوئیڈن میں آرمائک زبان کا ایک چینل کام کر رہا ہے۔ یہ چینل اور چند ویب سائٹس ان لوگوں کو ایک دوسرے سے جوڑے ہوئے ہیں جو آرمائک زبان بولنے میں اس قدر دلچسپی لیتے ہیں کہ انہوں نے اب بھی اس قدیم زبان کو زندہ رکھا ہوا [مزید پڑھیے]

اسلامی عناصر اور عرب دنیا کے آئین

April 16, 2012 // 0 Comments

عرب دنیا میں ۲۰۱۱ء میں بیداری کی لہر اٹھی اور نئی حکومتوں کے قیام کی راہ ہموار ہوئی۔ مگر ایک خوف بھی پیدا ہوا کہ اگر کہیں پرانی آمریتیں چلی گئیں اور اسلامی عناصر کی شکل میں نئی آمریتیں اٹھ کھڑی ہوئیں تو؟ شام میں اقلیتیں اس قدر خوفزدہ ہیں کہ انہوں نے اکثریت پر مظالم ڈھانے کو بھی برداشت کرلیا ہے۔ سیکولر ازم کو بچانے کے نام پر سبھی کچھ روا سمجھ لیا گیا ہے۔ مصر اور تیونس میں کچھ کچھ ایسا ہی خوف پایا جاتا ہے۔ ان دونوں ممالک میں نئے آئین کی تشکیل پر زور دیا جارہا ہے تاکہ کوئی بھی نیا نظام من مانی نہ کرسکے۔ ان تینوں ممالک میں اسلامی عناصر نے خاصے مختلف انداز سے معاملات کو نپٹایا اور [مزید پڑھیے]

1 2 3 4 5 6