Abd Add
 

NATO

نیٹو: مستقبل کے چیلنج

April 16, 2019 // 1 Comment

اٹلانٹک کے ارد گرد پھیلے ملکوں کا اتحادایک بار پھر اپنا ’’یوم پیدائش‘‘ـ منا رہا ہے سرد جنگ سے لے کر آج تک ان چالیس سالوں میں اس اتحاد نے یورپ میں امن کو یقینی بنایا ہے اور سکیولرازم کو تحفظ فراہم کیا ہے سویت یونین جب بکھر رہا تھا اس وقت نیٹو اتحاد نے ہی یورپ کو مستحکم رکھتے ہوئے بے مثال خوشحالی اور امن کو یقینی بنایا۔ سرآدم تھامس کے مطابق یہ اتحاد ایک پر عزم و مستحکم ارادے کو ظاہر کرتا ہے اٹلانٹک ملکوں کا یہ اتحاد یورپ میں بے مثال امن و استحکام کی وجہ سے مطمئن اور خوش ہے، یورپی ممالک امن و خوشحالی کے لیے نیٹو کے کردار کو اہم گردانتے ہیں نیٹو کے سابق برطانوی ایمبیسٹر، لندن تھنک [مزید پڑھیے]

NATO کا افغانستان سے انخلا چند حقائق

March 16, 2013 // 0 Comments

افغانستان سے امریکا اور ناٹو کے نکلنے کے اعلان شدہ وقت (دسمبر ۲۰۱۴ء) کے آنے میں اب صرف ۲۲ ماہ باقی رہ گئے ہیں۔ جبکہ لاکھوں ٹن سامان انہی ۲۲ مہینوں میں نکال کر لے جانا ہے۔ اس سامان سے متعلق چند دلچسپ حقائق درج ذیل ہیں: ۔ اتحادی افواج کے پاس موجود ابلاغی آلات (Communications Equipments) حساس سمجھے جاتے ہیں، یہ لازماً امریکا واپس لے جائے جائیں گے۔ ۔ استعمال شدہ بیٹریوں کو ری سائیکل کیا جائے گا یا ضائع کر دیا جائے گا۔ ۔ لکڑی کا بیشتر سامان افغانیوں کوایندھن کے لیے دے دیا جائے گا۔ ۔ دھات سے بنے پرزے، چھری کانٹے اور عام استعمال کی دیگر دھاتی اشیا میں سے کچھ امریکا لے جائی جائیں گی، کچھ ری سائیکل ہوں گی [مزید پڑھیے]

افغانستان میں NATO کو درپیش چیلنجز

October 16, 2008 // 0 Comments

نیٹو (North Atlantic Treaty Organization-NATO) درحقیقت شمالی امریکا اور یورپ کے ممالک پر مشتمل فوجی اتحاد ہے۔ تاہم اس اتحاد کے دائرہ کار میں صرف فوجی ہی نہیں بلکہ سیاسی اور سیکوریٹی کے امور بھی آتے ہیں۔ یہ ادارہ ۱۹۴۹ء میں قائم کیا گیا اور اس کا ہدف اس وقت کا سب سے بڑا خطرہ ہے یعنی سوویت سوشلسٹ ریپبلک کا مقابلہ کرنا، تیزی سے پھیلتے ہوئے کمیونزم کو روکنا اور مشرقی بلاک کی فوجی قوت کو کم اثر بنانا تھا۔ واقعیت یہی ہے کہ نیٹو کو دوسری جنگ عظیم اور سرد جنگ کے آغاز کا محاصل قرار دیا جاتا ہے۔ سوشلسٹ روس کے زوال کے بعد محققین کے ایک گروہ نے اصرار کیا کہ اب جبکہ دنیا ایک نئے نظام کی حامل ہو گئی [مزید پڑھیے]