Abd Add
 

شمالی کوریا

کم جونگ نام ’’وی ایکس‘‘ کا نشانہ کیسے بنے؟

March 1, 2017 // 0 Comments

ملائیشیا کا کہنا ہے کہ شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ اُن کے سوتیلے بھائی کم جونگ نام کو اعصاب شکن زہریلے مادے ’’وی ایکس‘‘ سے ہلاک کیا گیا۔ اس مادے کو اقوامِ متحدہ وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کے زمرے میں شمار کرتی ہے۔ رینڈ کارپوریشن کے ساتھ کام کرنے والے دفاعی ماہر بروس بینیٹ نے یہ بتانے کی کوشش کی ہے کہ وی ایکس مادہ کیسے کام کرتا ہے؟ وی ایکس ایک غیر معمولی تباہ کن کیمیائی ہتھیار ہے اور اس کا ایک قطرہ بھی انسانی جلد پر گرنے سے انسان مر سکتا ہے۔ یہ کیمیکل جلد کے راستے انسانی جسم میں داخل ہو کر نظامِ اعصاب کو تباہ کر دیتا ہے۔ وی ایکس تیل کی طرح کا مادّہ ہے اور [مزید پڑھیے]

شمالی کوریا ، ایک اور دنیا ہے!

August 16, 2015 // 0 Comments

شمالی کوریائی ثقافت کا سیاسی رنگ بھی ہے اور اِس میں تمام طلبہ کو ہر روز صبح کے وقت کوریا کے عظیم لیڈر کے مجسمے کے آگے سر جھکانا لازم ہے۔ سیاسی ثقافت کا ایک رنگ فورڈ کے نزدیک ہر صبح لاؤڈ اسپیکر پر سوشلزم کے توصیفی گیت طلبہ ہاسٹل کے قریب نشر کیا جانا ہے۔ […]

مغرب نے دہرا معیار اپنا رکھا ہے!

September 16, 2010 // 0 Comments

پاکستان کے جوہری پروگرام کے بانی اور مرکزی کردار ڈاکٹر عبدالقدیر خان نے ۲۰۰۴ء میں ٹیلی وژن پر اعتراف کیا تھا کہ انہوں نے ایران، شمالی کوریا اور لیبیا کو جوہری ٹیکنالوجی فراہم کی۔ اعتراف کے بعد انہوں نے خاصی خاموش زندگی بسر کی ہے۔ وہ تقاریب میں شرکت سے گریز کرتے ہیں۔ میڈیا پر انہیں کم ہی دیکھا جاسکتا ہے۔ اپنے ملک میں ہیرو اور بیرون ملک عالمی سلامتی کے لیے خطرہ سمجھے جانے والے ڈاکٹر عبدالقدیر خان سے فصیح احمد نے ای میل کے ذریعے انٹرویو کیا ہے۔ o پاکستان کے جوہری اثاثوں کو اسلامی بم قرار دیا جاتا ہے۔ کسی بھی دوسرے اسلامی ملک کے پاس جوہری بم نہیں، تو کیا پاکستانی جوہری اثاثوں کو اسلامی بم قرار دینا درست ہے؟ عبدالقدیر [مزید پڑھیے]

ایٹمی ٹیکنالوجی کے معاملے میں منافقت

July 16, 2010 // 0 Comments

ایٹمی ٹیکنالوجی کی بات چلے تو ساری توجہ شمالی کوریا اور ایران پر مرکوز ہو جایا کرتی ہے۔ شمالی کوریا نے ایٹمی عدم پھیلاؤ کے معاہدے (این پی ٹی) سے علیٰحدگی اختیار کی اور دو ایٹمی تجربات کرلیے۔ ایران کا معاملہ یہ ہے کہ وہ ایٹمی ہتھیار بنانے کے پروگرام سے انکار کرتا ہے مگر سچ یہ ہے کہ وہ اس راہ پر گامزن ہے۔ شام اور میانمار (برما) بھی ایٹمی ہتھیاروں کے حصول کے خواہش مند دکھائی دیتے ہیں۔ اور انہیں ممکنہ طور پر شمالی کوریا ایٹمی ہتھیار فراہم کرے گا۔ اسرائیل بھی دباؤ میں ہے۔ اس سے کہا جارہا ہے کہ ایٹمی عدم پھیلاؤ کے معاہدے میں شریک ہو جائے۔ اس حوالے سے اس پر مصر کی جانب سے دباؤ بڑھایا جارہا ہے۔ [مزید پڑھیے]

چین بالادستی کا خواہاں نہیں!

August 16, 2005 // 0 Comments

جس تیزی سے چین کی اقتصادی اور فوجی قوت میں اضافے کا سلسلہ جاری ہے‘ اُس کے پیشِ نظر عالمی سیاست کے اسٹیج پر اس کے کردار میں توسیع پر کسی کو تعجب نہیں ہونا چاہیے۔ شمالی کوریا نے جب گذشتہ ہفتے یہ اشارہ دیا کہ وہ اس شش فریقی مذاکرات میں واپس آسکتا ہے جو اس کے جوہری پروگرام پر منعقد کیے جانے ہیں۔ پھر امریکی صدر جارج بش اور جنوبی کوریا کے صدر روہمو ہیون (Rohmoo-Hyun) کا واشنگٹن میں پیانگ یانگ کو اسے ایسا کرنے کی تاکید کرنا یہ واضح کرتا ہے کہ شمالی کوریا ایسا کرنے کے لیے بغیر چین کے دبائو کے ہرگز تیار نہیں ہو سکتا ہے جو کہ شمالی کوریا و جنوبی کوریا کا بہت ہی اہم تجارتی شریک [مزید پڑھیے]

ایران کے پاس جوہری فنی مہارت موجود ہے!

March 16, 2005 // 0 Comments

واشنگٹن پوسٹ کے حوالے سے خبر ہے کہ ’’نیوز ویک‘‘ کے نامہ نگار لالی ویموت (Lally Weymouth) نے البرادی سے مصاحبہ (Interview) کیا جس کے سوال و جواب کی تفصیل درج ذیل ہے: س: کیا آپ ایجنسی کی سربراہی کے تیسرے دور کی سربراہی کے لیے بھی امیدوار ہوں گے؟ ج: میں اکیلا کینڈیڈیٹ ہوں۔ س: امریکا آپ سے کیوں نجات چاہتا ہے؟ ج: ان کا خیال ہے کہ میں دو بار انٹرنیشنل اٹامک انرجی کمیشن کا سربراہ رہا ہوں اس لیے مجھے نہیں رہنا چاہیے۔ جبکہ بہت سارے ممالک مجھ سے درخواست کرتے ہیں کہ اس منصب پر باقی رہوں۔ اس لیے ہمارے درمیان تنازعہ ہے اور بہت سارے اہم مسائل ہیں‘ ایران بھی ایک بہت بڑا مسئلہ ہے‘ اسی طرح شمالی کوریا۔ چنانچہ [مزید پڑھیے]

1 2