Abd Add
 

دہشت گردی

امن و امان کی بہتر ہوتی صورتحال

July 16, 2018 // 0 Comments

مسلح سپاہیوں کی حفاظت میں میران شاہ کا دورہ ایک خوشگوار تجربہ تھا،یہ تقریباً پچاس فیصد وزیرستان کا مرکزی و انتظامی علاقہ ہے۔یہ قبائلی علاقہ جات ایک عرصے تک اس وقت سے جہادیوں کے زیر اثر رہے جب اوباما اس علاقے کو دنیا کا خوفناک علاقہ کہتے تھے، لیکن کچھ ہی عرصے بعد پاک آرمی نے دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کیا اور یہ علاقہ اپنے کنٹرول میں کر لیا۔ ۲۰۱۴ء سے جاری آپریشن ۲۲ مہینوں کی جدو جہد کے بعد اپنے مقاصد حاصل کرچکا ہے۔اس وقت پاک آرمی کے جنرلوں کا کہنا ہے کہ میران شاہ دہشت گردی کی انتہا سے اب امن کے استحکام کی طرف تیزی سے سفر طے کر رہا ہے ۔مجموعی طور پر پورے پاکستان میں امن و امان کی [مزید پڑھیے]

’’نیو ورلڈ آرڈر اور دہشت گردی کے خلاف جنگ‘‘ جھوٹ ہے!

March 16, 2015 // 1 Comment

نیو ورلڈ آرڈر خود مختار ریاستوں کے لیے خطرہ اور دہشت گردی کیخلاف جنگ ایک بڑا جھوٹ ہے جبکہ دہشت گردی خود امریکا میں پروان چڑھتی ہے۔ ماہرین نے یہ بات ’’نیو ورلڈ آرڈر، جنگ کا نسخہ یا امن کا؟‘‘ کے عنوان سے منعقدہ ایک روزہ کانفرنس میں کہی۔ [مزید پڑھیے]

ــــہندوستانی مسلمانوں کی مظلومیت۔۔۔ بے سبب نہیں!

December 1, 2012 // 0 Comments

مسٹر این سی استھانا (NC Asthana) سینٹرل ریزرو پولیس فورس، کوبرا (ایک ایلیٹ کمانڈوفورس) کے انسپکٹر جنرل ہیں ۔ ان کی اہلیہ مسز انجلی نرمل پولیس انتظام کاری (Police Administration) میں پی -ایچ -ڈی ڈگری کی حامل ہیں ۔ مسٹر این سی استھانا ا ور مسز انجلی نرمل نے اگست ۲۰۱۲ء کے آخر میں شائع شدہ اپنی مشترکہ تصنیف “India’s Internal Security: The Actual Concerns” میں مختلف بھارتی پالیسیوں ،بشمول انٹیلی جنس ناکامی، دہشت گردانہ حملوں میں ذرائع ابلاغ کا کردار، داخلی سلامتی اور مسلمانوں پر ظلم و ستم اور انتقامی کارروائیوں کا محاکمہ و تجزیہ کیا ہے۔ کنل مجمدار نے مصنفین سے ان میں سے کچھ امور پر بات چیت کی، جو حسبِ ذیل ہے: o کیا ہندوستانی سلامتی ادارے حقیقی خطرات سے صرفِ [مزید پڑھیے]

اور اب یمن کو تیار کیا جارہا ہے!

October 1, 2010 // 0 Comments

امریکی کمانڈوز یمن کی فوج کو انسداد دہشت گردی کے حوالے سے خصوصی تربیت دے رہے ہیں۔ یہ کمانڈوز منظر عام پر آنے سے گریز کرتے ہیں کیونکہ صدر بارک اوباما کی پالیسی یہ ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں عوامی ردعمل سے بچنے کے لیے منظر عام پر آنے سے گریز کیا جائے۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ کے حوالے سے یمن کو نئی حکمت عملی کا امریکی ماڈل بنانے پر محنت کی جارہی ہے۔ امریکی حکومت نے یمن میں دہشت گردی پر قابو پانے کے لیے کروڑوں ڈالر کا ایسا تربیتی پروگرام شروع کیا ہے جس کا زیادہ ڈھنڈورا نہیں پیٹا جارہا۔ یمن کے بعض علاقے غیر معمولی حساس ہیں اور ان میں امریکیوں کا سر عام دکھائی دینا اور حکومت [مزید پڑھیے]

1 2