Abd Add
 

ترکی

کُردستان میں امن، اور ترکی میں متوقع تبدیلی

March 16, 2015 // 0 Comments

تُرک جنگی جہاز شمالی عراق کے قصبے قندیل کی برف سے ڈھکی پہاڑیوں پر کئی دہائیوں سے بمباری کررہے ہیں تاکہ ترکی میں کُردوں کے حقِ حکمرانی کے لیے ۱۹۸۴ء سے لڑنے والے کُردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) کے باغیوں کا صفایا کیا جاسکے۔ اب ترکی ایک دوسری طرز کی کارروائی کا سوچ رہا ہے۔ ملک کے وزیرِ تیل تانیر یلدیز کا کہنا ہے کہ اگر سب کچھ منصوبے کے مطابق ہوگیا تو ہم قندیل میں تیل تلاش کریں گے۔ تانیر یلدیز کا منصوبہ پی کے کے، کے ساتھ ترکی کے تعلقات میں معنی خیز تبدیلیوں کا حصہ ہے۔ جیل میں قید پارٹی کے رہنما عبداللہ اوکلان نے ۲۸ فروری کو ایک اجلاس میں اپنے ساتھیوں سے رواں موسمِ بہار میں مسلح جدوجہد کے [مزید پڑھیے]

ترکی، یورپی یونین اور میڈیا کی آزادی

January 1, 2015 // 0 Comments

یورپی یونین کی خارجہ امور کی سربراہ فیڈریکا موگرینی اور توسیعی امور کے کمشنر جوہانس ہان نے خبردار کیا تھا کہ رکنیت سے متعلق ترکی کی امیدوں کا انحصار قانون کی بالادستی اور بنیادی حقوق کے مکمل تحفظ پر ہے۔ انہوں نے میڈیا کی آزادی کو جمہوریت کا بنیادی اصول قرار دیتے ہوئے ان گرفتاریوں کو اس اصول سے انحراف قرار دیا۔

ترکی اور یورپ کے بگڑتے تعلقات!

December 16, 2014 // 0 Comments

ترکی کی یورپی یونین میں شمولیت کی امیدیں اس وقت ہی کافی کمزور پڑ گئی تھیں جب پچھلے سال غازی پارک میں احتجاج کے دوران حکومتی ردِ عمل کے نتیجے میں کم از کم ۹؍افراد جاں بحق ہو گئے تھے۔
ترکی کی امریکا کے ساتھ دوستی میں بھی تلخی آئی ہے۔ کیونکہ ترکی نے اتحادی جنگی جہازوں کو داعش پر بمباری کرنے کے لیے ’انسرلیک‘ (Incirlik) کا ہوائی اڈا فراہم کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

1 2 3 4 5 7