Abd Add
 

ترک فوجی بغاوت

ترکی: صدارتی ترجمان، ابراہیم قالن کا خصوصی انٹرویو

August 1, 2016 // 0 Comments

رپورٹر: جناب ابراھیم قالن ٹی آرٹی ورلڈ کے ون آن ون پروگرام میں خوش آمدید۔ صدر ایردوان ایک طویل عرصے سے ملک میں جمہوریت کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرنے والی اور ملکی سلامتی کے لیے خطرہ تشکیل دینے والی ’’متوازی حکومتی ڈھانچے‘‘ کی موجودگی کا کہتے چلے آئے تھے۔ ان معلومات سے آگاہی ہونے کے باوجود یہ کیسے ہوا کہ ملک میں بغاوت کی کوشش کی گئی؟ کیا اس میں خفیہ معلومات کی کمزوری بھی شامل ہے؟ ابراھیم قالن: یہ گروہ ایک طویل عرصے سے ملک میں کارروائیوں میں مصروف تھا۔ خاص کر ۱۷ تا ۲۵ دسمبر کی کارروائی کے بعد انہوں نے قومی خطرے کی ماہیت اختیار کر لی۔ ہم نے اس تاریخ کے بعد سے کئی ایک تدابیر اختیار کیں۔ ان لوگوں [مزید پڑھیے]

ترک بغاوت اور مصر کی حمایت

August 1, 2016 // 0 Comments

سلامتی کونسل میں ترکی کی ناکام فوجی بغاوت کے خلاف مذمتی قرارداد مصر کی وجہ سے پیش نہ ہو سکی، جس پر ترک وزارت خارجہ نے مصر کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔وزارت خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ قرارداد کے حوالے سے مصر کی مخالفت ہمارے لیے حیرت کا با عث نہیں، کیونکہ مصر کی موجودہ حکومت فوجی بغاوت کے نتیجے میں ہی اقتدار میں آئی تھی۔ پریس کانفرنس کے دوران بلغک کا کہنا تھا کہ ’’ فوجی بغاوت کے نتیجے میں برسر اقتدار آنے والی مصری حکومت کی جانب سے یہ قدرتی عمل ہے کہ وہ جمہوری طریقہ سے منتخب ہونے والے ہمارے صدر اور حکومت کے خلاف ہونے والی اس بغاوت پر کوئی اصولی اور واضح موقف اختیار کرے‘‘۔ مصر اقوام [مزید پڑھیے]

ایک ساتھ پیش قدمی

July 16, 2009 // 0 Comments

کیا یہ ترک جمہوریت کی آگے کی طرف چھلانگ ہے؟ ترکی پارلیمنٹ‘ جس میں جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی کو اکثریت حاصل ہے نے ۲۶جون کو اس انقلابی قانون کو پاس کیا جس کے تحت سویلین عدالتوں کو فوجی اہلکاروں پر مقدمہ چلانے کا اختیار دیا گیا۔ اس کے چار دن بعد ہی ایک سویلین پراسیکیوٹر نے ایک حاضر سروس کرنل کو جسٹس پارٹی (جو حکومت میں ہے) کو برطرف کرنے کے منصوبے میں مبینہ طور پر ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کرلیا۔ کرنل Dogan Cicek سیاسی اسٹیبلشمنٹ کو ورطۂ حیرت میں ڈالنے والی اس سازش میں پیش پیش تھے جس کا انکشاف گزشتہ ماہ ایک ترکی اخبار نے کیا تھا۔ فوج نے تحقیقات کا حکم دیا‘ لیکن جلد ہی کرنل کو بے قصور اور [مزید پڑھیے]