Abd Add
 

وزیرستان

کسی بھی قیمت پر!

October 16, 2011 // 0 Comments

پاک آرمی کی گیارہویں کور (پشاور) کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل آصف یاسین ملک سے ’’نیوز ویک‘‘ کے نذر الاسلام نے راولپنڈی میں انٹرویو کیا جو ہم آپ کی خدمت میں پیش کر رہے ہیں۔ ٭ ریاست ہائے متحدہ امریکا کی سربراہی میں لڑی جانے والی دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستانی فوج کا کیا کردار ہے؟ آصف یاسین ملک: پاکستانی فوج اور نیم فوجی ادارے دہشت گردی کے خلاف طویل مدت سے لڑ رہے ہیں۔ یہ لڑائی ۱۱ ستمبر ۲۰۱۱ء سے بھی پہلے سے جاری ہے۔ نائن الیون کے بعد تو ہمیں بس حالات کے مطابق خود کو بدلنا تھا۔ پہلے ہم جنگ کے روایتی طریقوں کو اپنائے ہوئے تھے۔ اب ہم کہیں بھی قانون نافذ کرنے سے متعلق کارروائی کی اہلیت رکھتے ہیں۔ [مزید پڑھیے]

پاکستان کو جرأت مندانہ فیصلے کرنے ہوں گے!

October 16, 2011 // 0 Comments

پاک امریکا تعلقات ایک بار پھر کشیدگی سے دوچار ہیں۔ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کا کردار امریکیوں کے نزدیک متنازع ہے۔ انہوں نے پاکستان پر حقانی گروپ کی بھرپور حمایت اور مدد کا الزام بھی عائد کیا ہے۔ دونوں ممالک ایک نازک موڑ پر کھڑے ہیں۔ پاکستان میں بدامنی اور بدحالی بنیادی مسائل ہیں۔ دوسری طرف امریکا کا کہنا ہے کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بھرپور کردار ادا نہیں کر رہا۔ پاکستان پر شمالی وزیرستان میں حقانی گروپ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ بھی کیا جارہا ہے۔ واشنگٹن کی اٹلانٹک کونسل کے ساؤتھ ایشیا سینٹر کے ڈائریکٹر شجاع نواز نے اپنے مضمون میں پاک امریکا تعلقات کا جائزہ لیا ہے۔ جو قارئین کے لیے پیش کیا جارہا ہے۔ امریکا [مزید پڑھیے]

باب وڈ ورڈ کے انکشافات

October 16, 2010 // 0 Comments

معروف امریکی صحافی باب وڈ ورڈ نے افغانستان میں امریکی صدر بارک اوباما کی حکمت عملی سے متعلق اپنی نئی کتاب ’’اوباماز وار‘‘ میں کئی چونکادینے والی باتیں بیان کی ہیں۔ زیر نظر مضمون اس کتاب کے اقتباسات پر مشتمل ہے۔ امریکا میں اب کسی کو بھی افغانستان میں جاری جنگ میں فتح کا یقین نہیں۔ سیاسی اور عسکری حلقوں میں مایوسی بڑھتی جارہی ہے۔ پاکستانی فوج کو بھارت سے توجہ ہٹاکر افغانستان پر توجہ دینے پر مجبور نہ کیا جاسکا۔ امریکی صدر بھی اب افغان حکمت عملی کے حوالے سے مایوسی کا اظہار کر رہے ہیں۔ سی آئی اے کے ڈائریکٹر لیون پینے ٹا اور قومی سلامتی کے امور میں امریکی صدر کے مشیر جیمز جونز نے گزشتہ سال پاکستان کے دورے میں صدر [مزید پڑھیے]