Abd Add
 

خواتین

جنوبی ایشیا میں خواتین کی حالتِ زار

July 1, 2015 // 0 Comments

بھارت کے کنوارے وزیراعظم ہمیشہ مخالف جنس سے مقابلہ کرتے نظر آتے ہیں۔ پچھلے سال انتخابات میں فتح حاصل کرنے کے بعد اپنی والدہ کے گھر جا کر انہوں نے اپنے آپ کو ماں کی تعظیم کرتے ہوئے دکھانے کی کوشش کی، لیکن وہ انہیں حلف برداری کی انتہائی اہم تقریب میں نہ بلا سکے۔ وہ اکثر خواتین کی عزت و احترام کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہیں، لیکن وہ ہمیشہ خواتین کو ایسے رشتوں سے مخاطب کرتے ہیں، جن سے مرد کا غلبہ یا پھر عورت کے تحفظ کے لیے مرد کے لازم ہونے کا تاثر ملتا ہے، جیسا کہ مائیں، بہنیں اور بیویاں۔ یہ باتیں ان کی ساکھ بہتر کرنے میں کوئی خاص مدد نہیں کر رہیں کیوں کہ وزیراعظم کے انتخاب [مزید پڑھیے]

برطانوی معاشرے میں ایشیائی خواتین

January 16, 2013 // 0 Comments

برطانیہ میں پاکستان اور بنگلا دیش سے تعلق رکھنے والی خواتین بھی اب جاب مارکیٹ کا حصہ بنتی جارہی ہیں۔ معاشرے میں ان کا یوں ضم ہونا اور خود کو معاشی کردار کے لیے تیار کرنا بہت اہم ہے۔ اس سے بہت سی معاشرتی تبدیلیوں کا بھی پتہ چلتا ہے۔ مشرقی لندن میں جیگوناری ویمین سینٹر میں بنگلا دیش سے حال ہی میں آئی ہوئی چھ خواتین انگریزی سیکھ رہی ہیں۔ انہیں انگریزی سکھانا سینٹر کے اس پروگرام کا حصہ ہے جس کا مقصد ان خواتین کو برطانوی معاشرے میں بہتر انداز سے زندگی بسر کرنے اور لوگوں سے بہتر میل جول رکھنے کے قابل بنانا ہے۔ یہ خواتین سر پر اسکارف رکھے ہوئے ہیں۔ انہیں یہ بھی سکھایا جائے گا کہ پولیس افسران، ڈاکٹروں [مزید پڑھیے]

جاپانی خواتین۔۔۔ ضائع شدہ سرمایہ

September 1, 2005 // 0 Comments

ٹائم کے کالم نگار Hannah Beech کا خیال ہے کہ جاپانی خواتین اسمارٹ ہوتی ہیں نیز کاروباری‘ انتظامی‘ تنظیمی و تدبیری صلاحیتوں سے آراستہ ہوتی ہیں لیکن نہ معلوم کیوں ان کی صلاحیتوں کو مہمیز دینے کی کوشش نہیں کی جاتی؟ Yuka Tanimoto کو چائے پیش کرنے کا خوب سلیقہ ہے۔ وہ یقینا اس کے علاوہ بھی بہت کچھ انجام دے سکتی ہے لیکن اس ۳۳ سالہ جاپانی نیوز کاسٹر کا کہنا ہے کہ اس کے جاپانی باس جو سب کے سب مرد ہیں‘ چائے کے علاوہ اس کی صلاحیتوں میں بہت زیادہ دلچسپی کا اظہار نہیں کرتے۔ Yamaichi Securities نامی فرم جسے Tanimoto نے ۱۹۹۷ء میں نیوز کاسٹر کی حیثیت سے جوائن کیا تھا‘ خبروں پر اپنی رائے اور تبصرہ دینے کی وجہ سے [مزید پڑھیے]