Abd Add
 

شمارہ 16 اپریل 2015

پندرہ روزہ معارف فیچر کراچی

جلد نمبر:8، شمارہ نمبر:8

تاجکستان کی حزبِ اختلاف: رہنما قتل، پارلیمان سے بے دخل

April 16, 2015 // 0 Comments

صرف روس ہی وہ سابق سوویت ریاست نہیں ہے جہاں حزبِ اختلاف کے رہنمائوں کو سڑکوں پر موت کے گھاٹ اتار دیا جاتا ہے۔ ۲۰۱۲ء میں تاجکستان کے صدر کے داماد کے ساتھ کاروباری ڈیل نہ ہونے کے بعداپنا ملک چھوڑنے والے ’’گروپ ۲۴‘‘ نامی تاجک تحریک کے راہنما گزشتہ دنوں استنبول میں رات کا کھاناکھاتے وقت بیمار ہوگئے۔ ترک میڈیا کے مطابق اُن کا بیمار ہونا زہر خورانی کے باعث تھا۔ ایسا تھا یا نہیں، لیکن جب وہ طبی امداد کے لیے باہر نکلے تو اُنہیں سر میں پیچھے کی جانب سے گولی مار کر قتل کردیا گیا۔ عمر علی کوواتووا کے قاتل فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ عمر علی کا قتل تاجکستان میں یکم مارچ کو ہونے والے پارلیمانی انتخابات کے چند روز [مزید پڑھیے]

محمد قمرالزماں شہید، ایک تعارف

April 16, 2015 // 0 Comments

محمد قمرالزماں اپنے ہم عصروں میں ایک صاف گو انسان اور بہترین رہنما کے طور پر جانے جاتے تھے۔ ایک ایسے انسان جو مصائب کا سامنا بھی ہمیشہ پُرسکون انداز میں کرتے تھے۔ ایک واضح اور مضبوط رائے اور شخصیت کے حامل اور غور و فکر میں مشغول رہنے والے محمد قمر الزماں اپنی شہادت تک جماعت اسلامی بنگلا دیش کے سینئر اسسٹنٹ سیکرٹری جنرل تھے۔ ابتدائی زندگی اور تعلیم محمد قمر الزماں ۴ جولائی ۱۹۵۲ء کو ضلع شیرپور، بجیت کھالی یونین کے مودی پاڑا گائوں کے ایک معروف مسلم خاندان میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے ابتدائی تعلیم کا آغاز اپنے آبائی گائوں میں واقع کامری کالی تولہ گورنمنٹ پرائمری اسکول سے کیا۔ انہیں اپنے اسکول میں ہمیشہ اوّل آنے کا اعزاز حاصل رہا۔ آٹھویں [مزید پڑھیے]

سچائی کو جھوٹ پر فتح ہوگی! | قمرالزمان شہید کی آخری گفتگو

April 16, 2015 // 0 Comments

قمرالزمان کی اپنے وکلا سے آخری ملاقات کی تفصیل بتاتے ہوئے مطیع الرحمان اکنڈا نے کہا کہ ہم پانچ وکلا نے جماعتِ اسلامی کے سینئر اسسٹنٹ سیکرٹری جنرل، ممتاز صحافی اور دانشور قمر الزمان سے ڈھاکا سینٹرل جیل میں ہفتہ ۴؍اپریل کو ملاقات کی۔ قمر الزمان نے ۵؍اپریل کو ایپلیٹ ڈویژن کے سامنے نظرثانی اپیل کی سماعت کے حوالے سے ضروری ہدایات دیں۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے ملکی حالات اور ان کی جماعت کے حوالے سے حکومتی سازش پر گہری تشویش اور اضطراب کا اظہار کیا۔ کیس کی تیاری کے حوالے سے قمر الزمان سے ۳۵ منٹ تک بات چیت ہوئی۔ وہ بہت مضبوط اعصاب کے مالک، پُرعزم اور اللہ تعالی کی راہ میں جان دینے کے لیے مکمل طور پر تیار تھے۔ یہ [مزید پڑھیے]