Abd Add
 

مصر

مصر میں قید خاندانوں کی غیر انسانی صورتحال

August 16, 2019 // 0 Comments

فوج نے دریائے نیل کے کنارے سے تعمیراتی کارکن ۲۰سالہ لطفی ابراہیم کو ۲۰۱۵ء کے موسم بہارمیں حراست میں لیا، اس وقت وہ مسجد سے گھر جارہاتھا،تین ماہ زیر حراست رہنے کے بعد جب ابراہیم سے خاندان کے لوگ ملے تو اس کی حالت بہت زیادہ خراب تھی، اس پر بری طرح تشدد کیاگیاتھا۔ ابراہیم کی ماں تہانی نے بتایا کہ انہوں نے تشدد چھپانے کے لیے میرے بیٹے کا ہاتھ آستین سے ڈھک دیاتھا، لیکن ہم پھر بھی اس کے ہاتھوں پر جلنے کے نشانات دیکھ سکتے تھے، اس کاچہرہ پیلا پڑگیاتھا، اس کے بال بھی مونڈ دیے گئے تھے۔ابراہیم پر ملٹری اکیڈمی کے تین طلبہ کو سڑک کنارے بم دھماکے میں قتل کرنے کا الزام تھا۔ ابراہیم نے اپنی بے گناہی کی قسم [مزید پڑھیے]

اخوان المسلمون کا امت کے نام اہم پیغام

July 1, 2019 // 0 Comments

حمدہ و صلاۃ کے بعد الاخوان المسلمون دنیا بھر کی آزاد اقوام کو شہید صدر محمد مرسی کی مظلومانہ شہادت پر آواز بلند کرنے پر مبارکباد پیش کرتی ہے۔ یہ حقیقت تاریخ میں لکھی جائے گی کہ پوری دنیا کے حریت پسند اس بات پر گواہ تھے کہ مصر کی تاریخ کے پہلے منتخب صدر کو کیسے ایک غاصب فوجی قیادت نے انتہائی مشکوک اور پراسرار حالات میں شہید کیا۔ عسکری انقلاب کے چھ سال مکمل ہونے سے چند دن قبل صدر محمد مرسی کی شہادت نے مجرم عسکری انقلاب اور حریت پسند عوام کے مابین معرکے کو ایک نئی صورت اور ایک نیا رُخ دے دیا ہے، جس بِنا پر یہ بات ضروری ہے کہ مصر میں عوامی سطح کے انقلاب میں پائی جانے [مزید پڑھیے]

عرب دنیا کے مَلِک اور مملوک ریاستیں

July 16, 2016 // 0 Comments

قاہرہ کے دفتر میں بیٹھ کر نیل کے نظاروں سے لطف لیتا تاجر اپنا موبائل فون شیشے کے جار میں رکھتا ہے جبکہ شہر کے دیگر حصوں میں ایک لکھاری اپنا فون فرج میں رکھتی ہے۔ اگر اسمارٹ فون کبھی ساری عرب دنیا میں انقلابیوں کا ہتھیار تھے تو اب یہ خفیہ اداروں کا آلۂ کار بن گئے ہیں تاکہ مخالفین کے فون ہیک کرکے انہیں جاسوسی کے آلات میں بدل دیا جائے۔ ان دنوں عرب دنیا میں کام کرنے والے صحافی کو ایسے اسمارٹ فون کی ضرورت ہے جو روابط کی انتہائی محفوظ ایپس سے مزین ہو۔ مصری اس ضمن میں ’’سگنل‘‘ کو پسند کرتے ہیں، سعودیوں کی ترجیح ’’ٹیلی گرام‘‘ ہے اور لبنانی ابھی تک ’’واٹس ایپ‘‘ پر بھروسا کیے ہوئے ہیں۔ ۲۰۱۱ء [مزید پڑھیے]

1 2 3 7