Abd Add
 

بھارت

کشمیر: ملائیشیا ، بھارت میں بڑھتی کشیدگی

October 16, 2019 // 0 Comments

بھارت کے زیر انتظام کشمیر اور آرٹیکل ۳۷۰ پر ملائیشیا کی جانب سے پاکستان کی حمایت کے بعد بھارت اور ملائیشیا کے درمیان تجارتی کشیدگی بڑھ گئی ہے اور دونوں ہی ملک ایک دوسرے کو تجارتی محاذ پر سزا دینے کی کوشش میں ہیں۔ گزشتہ ماہ اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل میں پاکستان، ترکی اور چین کی طرح مسئلہ کشمیر کو اٹھاتے ہوئے ملائیشیا کے وزیر اعظم مہاتیر محمد نے جب بھارت کو نشانہ بنایا تو بھارت کے لیے یہ کسی جھٹکے سے کم نہیں تھا۔ مہاتیر محمد نے الزام لگایا تھا کہ بھارت نے جموں و کشمیر پر قبضہ کر لیا ہے۔ ملائیشیا اور بھارت کے تعلقات اچھے ہوا کرتے تھے لیکن کشمیر کے مسئلے پر مہاتیر محمد کا پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑا [مزید پڑھیے]

مسلمانوں کی آبادیاں نشانے پر

August 1, 2019 // 0 Comments

بھارت کے وزیر داخلہ امیت شاہ نے کہا ہے کہ بھارت کے وجود کے لیے غیرقانونی شہریوں کی حیثیت دیمک اور گُھس بیٹھیوں (infiltrator) کی ہے۔ حکومتِ ہند اِن کو تلاش کرکے سمندر میں پھینکے گی۔ مقامی سیاست دان کی جانب سے غیر قانونی شہریوں کے معاملے پر بدقسمتی سے یہ روایتی اُبال نہیں۔ گزشتہ سال بھارت کی سرکار نے ۳ کروڑ ۳۰ لاکھ کی آبادی پر مشتمل آسام کے بارے میں غیر قانونی شہریوں کی ایک فہرست جاری کی تھی، جس میں چالیس لاکھ غیر قانونی شہریوں کی تعداد بتائی گئی تھی جن کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ غیر ملکی ہیں اور ان کے پاس یہاں رہنے کا کوئی اختیار نہیں۔ اس کے بعد ماہ ِ جون میں مزید ایک لاکھ [مزید پڑھیے]

آسام میں بھارتی حکومت کا پاگل پن!

August 1, 2019 // 0 Comments

آسام کی حکومت نے اپنے شہریوں کو غیر ملکی قرار دینے کا آغاز کردیا ہے۔ بھارت کی مرکزی حکومت بھی ریاست آسام کے نقشِ قدم پر چلتے ہوئے ایسے ہی اقدامات کرنا چاہتی ہے۔ آسام کا علاقہ پراگ (Prague) سے بھی گرم آب و ہوا کا حامل ہے۔ یہاں نہ تو زیک (Czeck) کے دارالحکومت کی طرح چوراہے ہیں اور نہ پتلی پتلی گلیاں۔ یہاں جست کے چھتوں والے گھر، پام اور آم کے کھیت ہیں۔ آسام کے اس ماحول کوفرانز کافکا (Franz Kafka) [فرانز کافکا کا شمار بیسویں صدی کے اہم ناول نگاروں اور افسانہ نگاروں میں ہوتا ہے۔ جرمن زبان کا یہ مصنف ہنگری میں ۱۸۸۳ء میں پیدا ہوا اور ۴۰ سال عمر پاکر ٹی بی کے مرض میں جان دی۔ اس کے [مزید پڑھیے]

بھارت خوف کا شکار کیوں؟

July 1, 2019 // 0 Comments

بھارت عالمی تجارت میں ایک بڑا شراکت دار ضرور ہے لیکن اسے بھی چین جیسی بڑی طاقت سے گھیراؤ کے خطرات لاحق ہیں۔ چین کے ’’بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے‘‘ میں بھارت کے پانچ پڑوسی ممالک پاکستان، بنگلادیش، سری لنکا، نیپال اور مالدیپ شامل ہیں۔ بھارت کو تشویش ہے کہ اس منصوبے سے اس کے پڑوسی ممالک میں چین کا اثر و رسوخ حد سے زیادہ بڑھ جائے گا اور نئی بننے والی بندرگاہیں اور سڑکیں چین کو عسکری معاونت بھی فراہم کر سکتی ہیں۔اس وجہ سے بھارت جنوبی ایشیا میں چین سے ایک قدم آگے رہنے کے لیے کوششیں کر رہا ہے۔اب تک بھارت نے سرمایہ کاری کے ذریعے ان ممالک میں اپنا اثر ورسوخ بڑھانے کی کوشش کی ہے۔ان کوششوں میں بھارت کو کچھ [مزید پڑھیے]

مودی کے لیے صرف امن کا آپشن!

April 1, 2019 // 0 Comments

بھارت میں عام انتخابات کی تیاری ہے۔ ایسے میں کچھ بھی ہوسکتا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اگر چاہیں تو صورتِ حال کو اپنے حق میں کرنے کے لیے کچھ بھی کرسکتے ہیں۔ یہ بھی ہوسکتا ہے کہ وہ جنگی جنون کو ہوا دیں۔ پاکستان کے خلاف جاکر ووٹ بینک کو اپنے حق میں کرنے کی بھرپور کوشش کی جاسکتی ہے، مگر اس سے کہیں بڑھ کر اور بہتر آپشن یہ ہے کہ نریندر مودی امن کی بات کریں۔ پاکستان سے تعلقات بہتر بنانے کی بات کرکے وہ پورے بھارت میں فضا اپنے حق میں کرسکتے ہیں۔ پاکستان اور بھارت دونوں ہی جوہری ہتھیاروں سے لیس ہیں۔ دونوں کے درمیان جنگ کا خطرہ ابھی ابھی ٹلا ہے۔ بھارت کو اس بحران سے بہت کچھ سیکھنا ہے۔ [مزید پڑھیے]

1 2 3 4 5 10