Abd Add
 

جماعت اسلامی ہند

’’عالم عرب کو ہندوستان کے حالات سے باخبر رہنا چاہیے!‘‘

April 1, 2013 // 0 Comments

ماہ نومبر ۲۰۱۲ء میں جامعۃ الفلاح کے جشن طلائی کے موقع پر المجتمع کے مدیر ڈاکٹر شعبان عبدالرحمن بلریا گنج آئے تھے۔ اس دوران انہوں نے مولانا سید جلال الدین عمری امیر جماعت اسلامی ہند سے انٹرویو کیا تھا، جو المجتمع کی ۹۔۱۵؍فروری ۲۰۱۳ء کی اشاعت میں شائع ہوا۔ اس کا اردو ترجمہ جناب خالد سیف اللہ اثری نے کیا ہے۔ امیر جماعت اسلامی ہند کے ساتھ یہ بات چیت بڑی اہمیت کی حامل ہے۔ اس بات چیت سے ہندوستان کی مسلم اقلیت کے حالات و کوائف پر روشنی پڑتی ہے۔ یہ دنیا میں مسلمانوں کی سب سے بڑی اقلیت سمجھی جاتی ہے، کیونکہ اس کی تعداد عالم عرب کی مجموعی آبادی کے برابر یا اس سے زیادہ ہے۔ اس کے باوجود یہ ایک واقعہ [مزید پڑھیے]

جماعت اسلامی ہند کے رہنما مولانا محمد شفیع مونس انتقال کر گئے!

May 1, 2011 // 0 Comments

جماعت اسلامی ہند کے بزرگ و مرکزی رہنما مولانا محمد شفیع مونس کا ۶ اپریل کو ظہر کے وقت انتقال ہوگیا۔ ۹۳ سالہ بزرگ رہنما ۱۹۱۸ء میں ضلع مظفر نگر اتر پردیش میں پیدا ہوئے تھے۔ ۱۹۴۴ء سے ہی جماعت سے وابستہ ہو گئے تھے۔ مولانا محمد شفیع مونس نے ابتدائی دور میں غازی آباد اور اینگلو عربک اسکول دہلی میں بطور استاد خدمات انجام دیں۔ لیکن بعد میں وہ ملیح آباد اور پھر رام پور میں مرکزی درسگاہ جماعت اسلامی سے وابستہ رہے۔ مونس صاحب اپنی طویل تحریکی زندگی میں جماعت اسلامی کے تمام اہم مناصب پر فائز کیے جاتے رہے۔ نائب امیر جماعت، قیم (سیکریٹری جنرل)، اترپردیش اور آندھرا پردیش کے امیر حلقہ، مرکزی مجلس شوریٰ اور مجلس نمائندگان وغیرہ کے رکن اور [مزید پڑھیے]

جماعت اسلامی ہند: سیاست میں سرگرمِ عمل ہونے کو ہے!

September 1, 2005 // 0 Comments

ڈاکٹر محمد نجات اﷲ صدیقی بین الاقوامی شہرت کے ماہر اقتصادیات اور معروف اسکالر ہیں‘ وہ اسلامی تحریکوں کے فکری قائد ہیں۔ دہلی سے شائع ہونے والے ہفت روزہ ’’ریڈی اینس‘‘ کے مہتاب عالم سے ایک خصوصی انٹرویو میں انہوں نے بڑی تفصیل کے ساتھ جماعت اسلامی ہند اور اسلامی تحریکوں کو درپیش مسائل پر گفتگو کی ہے۔ ڈاکٹر نجات اﷲ صدیقی پوری دنیا کے مسلمانوں اور اسلامی تحریکات میں ایک نمایاں مقام رکھتے ہیں۔ ان کے افکار و نظریات سے اختلاف کیا جاسکتا ہے‘ لیکن ان کی علمی بصیرت اور دینی خدمات کے بارے میں دورائے نہیں ہو سکتیں۔ پاکستان کے حالات میں ڈاکٹر صاحب کے خیالات پوری طرح فٹ نہیں بیٹھتے لیکن بھارت کے مسلمان جو ہندو جبر کا سامنا کر رہے ہیں‘ [مزید پڑھیے]

خود احتسابی کا عمل دیانتداری سے انجام دیں

July 1, 2005 // 0 Comments

ڈاکٹر محمد رفعت ہندوستان کے ایک ممتاز دانشور ہیں۔ اسٹوڈنٹس اسلامک موومنٹ آف انڈیا (SIMI) کے صدر رہ چکے ہیں۔ آج کل بھارت کی مشہور و معروف یونیورسٹی جامعہ ملّیہ اسلامیہ دہلی میں علمِ طبیعیات کے پروفیسر ہیں۔ آپ نے فزکس میں ماسٹرز کی ڈگری علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے حاصل کی اور ڈاکٹریٹ کی ڈگری بھارت ہی کے ممتاز و نامور ادارے Indian Institute of Technology کانپور سے حاصل کی۔ ڈاکٹر محمد رفعت نے اسلامی طلبہ تنظیم میں فعال قائدانہ کردار ادا کرتے ہوئے بھی اپنے روشن تعلیمی کیریئر پر کبھی آنچ نہ آنے دی اور ہمیشہ امتیازی نمبروں سے کامیاب ہوتے رہے۔ اس وقت آپ جماعت اسلامی ہند کی مرکزی مجلسِ شوریٰ کے رکن اور دہلی و ہریانہ کی صوبائی جماعت کے امیر [مزید پڑھیے]