Abd Add
 

اخوان المسلمون

اخوان المسلمون وقت کے انتظار میں!

November 16, 2010 // 0 Comments

اخوان المسلمون ۵ سال قبل مصری پارلیمنٹ میں ۲۰ فیصد نشستیں حاصل کر کے طاقتور حزب اختلاف کے روپ میں سامنے آئی تھی۔ کسی سیاسی جماعت کے لیے ایسے وقت میں، جب کہ اس پر سیاست میں حصہ لینے پر مکمل پابندی عائد ہو اور یہ کہ گزشتہ ۱۰ برسوں میں ’’جمہوریہ مصر‘‘ میں ہونے والے انتخابات آزادانہ اور شفافیت سے کوسوں دور رہے ہوں، ایک متاثر کن کارنامہ ہوتا ہے۔ مصر کے صدر حسنی مبارک کی جانب سے عدلیہ کو انتخابات کی نگرانی کے عمل سے الگ کرنے کے اقدام پر تجزیہ نگاروں کا خیال تھا کہ نومبر کے عام انتخابات میں ووٹوں کا تناسب بہت زیادہ ہو گا۔ اس کے باوجود حزب اختلاف نے انتخابات کا بائیکاٹ کر دیا اور اخوان المسلمون نے [مزید پڑھیے]

مجھے سرگرمیوں کا قانونی جواز عوام نے دیا ہے!

February 16, 2006 // 0 Comments

اِخوان المسلمون کے مرشد عام محمد مہدی عاکف ہفتہ وار ’الاحرام‘ کے عامرہ ہویدی کو انٹرویو دیتے ہوئے اپنے جذبات کا اظہار اس طرح کرتے ہیں کہ ’’اخوان کی جیت عوام کے مرہون منت ہے اور واشنگٹن کی اِخوان المسلمون سے مذاکرات کی کوشش کو غیرمخلصانہ ٹہراتے ہوئے کہتے ہیں کہ اس کا مقصد محض امریکی مفادات کا تحفظ اور لوگوں کو ہمارے خلاف مائل کرنا ہے‘‘۔ استاذ محمد عثمان عاکف ۲۱ جولائی ۱۹۲۸ء کو مصر کی ریاست (صوبہ قہلیہ) کے ایک گاؤں میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے ابتدائی تعلیم منصورہ (مصر) میں حاصل کی‘ پھر اپنے والد اور بھائیوں کے ساتھ قاہرہ منتقل ہو گئے۔ وہیں پر ۱۹۶۰ء میں بارہ سالہ محمد مہدی عثمان عاکف کا اِخوان سے تعارف ہوا۔ ۱۹۵۰ء میں استاذ محمد [مزید پڑھیے]

زینب الغزالیؒ اسلامی تحریک کی ایک مایہ ناز خاتون

August 16, 2005 // 0 Comments

نامور خاتون مبلغ اور تحریکِ اسلامی کی عظیم کارکن زینب الغزالی کا ۳ اگست ۲۰۰۵ء کو انتقال ہو گیا۔ انا ﷲ وانا الیہ راجعون۔ مرحومہ کی عمر ۸۸ برس تھی اور آپ نے دعوتِ اسلامی کی راہ میں اپنے انمٹ نقوش چھوڑے ہیں۔ آپ مصر کے صوبہ البحیرہ میں ۱۹۱۷ء میں پیدا ہوئیں۔ آپ کا خاندانی سلسلہ حضرت عمرؓ اور حضرت امام حسنؓ بن علی بن ابی طالب سے جاملتا ہے۔ جناب زینب الغزالی میں ابتدا ہی سے عبقریت کے اوصاف نمایاں تھے۔ دس سال کی عمر میں ہی خطابت میں آپ کو ملکہ حاصل تھا۔ پوری زندگی انہوں نے اپنے آپ کو ازخود تعلیم حاصل کرنے والوں کے لیے ایک نمونہ کے طور پر پیش کیا۔ آگے بڑھنے کی اپنی آرزو اور اپنے مضبوط [مزید پڑھیے]

1 6 7 8