Abd Add
 

پاکستان

مودی کے لیے صرف امن کا آپشن!

April 1, 2019 // 0 Comments

بھارت میں عام انتخابات کی تیاری ہے۔ ایسے میں کچھ بھی ہوسکتا ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی اگر چاہیں تو صورتِ حال کو اپنے حق میں کرنے کے لیے کچھ بھی کرسکتے ہیں۔ یہ بھی ہوسکتا ہے کہ وہ جنگی جنون کو ہوا دیں۔ پاکستان کے خلاف جاکر ووٹ بینک کو اپنے حق میں کرنے کی بھرپور کوشش کی جاسکتی ہے، مگر اس سے کہیں بڑھ کر اور بہتر آپشن یہ ہے کہ نریندر مودی امن کی بات کریں۔ پاکستان سے تعلقات بہتر بنانے کی بات کرکے وہ پورے بھارت میں فضا اپنے حق میں کرسکتے ہیں۔ پاکستان اور بھارت دونوں ہی جوہری ہتھیاروں سے لیس ہیں۔ دونوں کے درمیان جنگ کا خطرہ ابھی ابھی ٹلا ہے۔ بھارت کو اس بحران سے بہت کچھ سیکھنا ہے۔ [مزید پڑھیے]

چٹاگانگ کا چوہدری

December 1, 2018 // 0 Comments

ہمارے ہاں کوئی بندہ بات بھول جائے تو طنزیہ کہا جاتا ہے:آپ بوڑھے ہورہے ہیں۔ بھول جانے سے انسان ڈرتا ہے۔ باتیں یاد رہ جائیں تو بھی۔ کہیں پڑھا تھا:بھولنا بھی نعمت سے کم نہیں۔ اگر آپ تلخ یادیں یا تکلیف دہ لمحات نہیں بھولیں گے تو ہر لمحہ اذیت میں گزرے گا لہٰذا خدا نے انسان کے اندر بھولنے کی صلاحیت رکھی ہے۔ انسان پرانی باتیں نہیں بھولے گا تو نئی چیزیں دماغ میں کیسے جگہ بنائیں گی؟ دوسری طرف یہ حالت ہے کہ بعض تکلیف دہ یادیں بھولنا چاہیں تو بھی فیس بک آپ کو بھولنے نہیں دیتی۔ اسی فیس بک نے یاد دلایا: ۲۲ نومبر ۲۰۱۵ء کو میں نے ایک ٹویٹ کیا تھا، جو ان دنوں فیس بک پر بھی اپ لوڈ [مزید پڑھیے]

’نیا ۱۰۰ دن، پرانا ۹ دن‘

December 1, 2018 // 0 Comments

تبدیلی کے پہلے ۱۰۰؍دنوں میں پاکستان کتنا تبدیل ہوا ہے؟ امید اور ناامیدی کے پنڈولم پر جھولتے عوام کی قسمت میں صرف دلفریب وعدے ہی ہیں یا پھر ملک کی سمت درست کرنے کے لیے پہلی اینٹ رکھنے کی کوئی سنجیدہ کوشش بھی کی گئی؟ ان سوالوں کا جواب ڈھونڈنے کی سعی کرنا اور پھر اس سعی لاحاصل کو عوام کے سامنے پیش کرنا، پیشہ ورانہ مجبوری کا تقاضا ٹھہرا مگر ہائے افسوس! واچ ڈاگ کے دعوے پر پورا اترنے کی کوششوں اور تنقید برائے تنقید کے ’بلٹ ان‘ فارمولے پر عمل کرنے کی ’جزِ لاینفک‘ مجبوریوں نے صحافی کو میڈیا مین بنا کر، اس سے تجزیے کی صلاحیت چھین کر ہاتھوں میں قلم کے بجائے فیصلے کا ہتھوڑا تھما دیا ہے۔ معاشی حالت انفرادی [مزید پڑھیے]

امریکا سے بہتر تعلقات کی اُمید رکھنا حماقت ہے!

October 16, 2018 // 0 Comments

سوال: عمران خان پاکستان کے نئے وزیر اعظم بن گئے ہیں۔حکومت سے باہر ہوتے ہوئے کیا آپ کو لگتا ہے اس سے ملک میں جاری جاگیردارانہ سیاست کا تسلسل ٹوٹے گا؟ جواب: وزیراعظم کے سوا اہم حکومتی عہدوں پر تعینات تقریباََ تمام ہی افراد ماضی میں کسی نہ کسی حکومت کا حصہ رہ چکے ہیں۔ وزیراعظم ان پرانے سیاست دانوں میں گھرے ہوئے ہیں، جو ماضی کی حکمران جماعتوں کے ساتھ رہے ہیں۔ موجودہ کابینہ شروع میں چھوٹی اور فعال تھی۔ لیکن اب کابینہ میں نئے افراد کااضافہ ہو رہا ہے۔ حکومت نئے نئے کام کر رہی ہے۔ جیسے کہ سرکاری گاڑیوں کی نیلامی کرنا۔ لیکن حکومت کو غیر ملکی وفود کی نقل و حرکت کے لیے گاڑیوں کی ضرورت ہوگی۔ حکومت کی اب تک [مزید پڑھیے]

1 2 3 4 5 12