برطانیہ

برطانیہ اور ترکی کا تجارتی معاہدہ

January 16, 2021 // 0 Comments

برطانیہ جہاں نئے سال کے آغاز پر یورپی یونین کا اقتصادی مدار چھوڑنے کی تیاری کر رہا ہے، وہیں اس نے ترکی کے ساتھ ایک آزادانہ تجارت کے معاہدے پر دستخط کردیے ہیں۔ یہ معاہدہ جو یکم جنوری سے نافذ العمل ہوگا، اس کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان تجارت کا فروغ ہے، جو ۲۰۱۹ء میں ۲۵؍ارب ڈالر سے زیادہ مالیت کی رہی تھی۔ بریگزٹ کے بعد کا یہ معاہدہ ان معاہدوں میں شامل ہے جو برطانوی حکومت دنیا بھر کے ممالک سے کرنا چاہتی ہے، معاہدہ ایسے وقت میں سامنے آیا ہے، جب اس حکومت نے یورپی یونین کے ساتھ تجارتی معاہدے کو حتمی شکل دے دی ہے۔ برطانیہ نے رواں سال ۳۱ جنوری کو یورپی یونین سے علیحدگی اختیار کرلی تھی، تاہم ۳۱ [مزید پڑھیے]

اسلام اور برطانوی اقدار

February 1, 2019 // 1 Comment

برطانیہ میں کئے گئے ایک سروے کے مطابق فرانس اور جرمنی کے مقابلے میں برطانیہ کے لوگ اسلام کے حوالے سے زیادہ متحمل ہیں تاہم برطانوی شہریوں کی ایک تہائی تعداد ملکی اقدار اور اسلام کو ایک دوسرے سے متصادم سمجھتے ہیں۔[مزید پڑھیے]

ملکۂ برطانیہ سے ایک دلچسپ گزارش

November 1, 2015 // 0 Comments

اطلاعات کے مطابق ایک امریکی شہری نے ملکۂ برطانیہ اور برطانوی وزیراعظم کے نام ایک مراسلہ لکھا ہے۔ مراسلہ ایک ہی ہے البتہ خطاب دونوں سے ہے۔ اس کی خبر ایک ویب سائٹ ریڈٹ کو زیر استعمال رکھنے والے ایک شخص نے دی ہے۔ اس کا کہیں نام نہیں آیا ہے اور نہ مراسلہ نگار کا نام ظاہر کیا گیا ہے۔ البتہ بکنگھم پیلس (برطانوی شاہی محل) نے اس کی تصدیق کر دی ہے کہ ملکہ کے نام اس طر ح کا ایک مراسلہ موصول ہوا ہے۔ یہی نہیں ملکہ کی طرف سے اس کا جواب بھی ارسال کر دیا گیا ہے۔ برطانوی ذرائع ابلاغ نے ان دونوں واقعات کی نہ صرف تصدیق کر دی ہے بلکہ ملکہ کی جانب سے ارسال کردہ جواب کا [مزید پڑھیے]

عسکری و سفارتی قوت سے محروم ہوتا برطانیہ

May 1, 2015 // 0 Comments

اب جبکہ عام انتخابات میں محض ایک مہینہ رہ گیا ہے، دنیا کی نظریں برطانیہ پر ہیں۔ مگر یہ نگاہیں پیداواری ریاست اور تیزی سے بہتر ہوتی معیشت پر نہیں، جس کی بابت وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون بڑھ چڑھ کر بات کررہے ہیں، اور نہ ہی برابری سے متعلق اُس اہم بحث پر ہیں جو لیبر پارٹی کے رہنما ایڈ ملی بینڈ چھیڑنا چاہتے ہیں۔ اس کے بجائے توجہات بین الاقوامی تعلقات کے ریڈار پر موجود اس خلا کی جانب ہیں جسے برطانیہ کو پُر کرنا چاہیے تھا۔ روسی جارحیت صرف یوکرین تک محدود نہیں ہے۔ روس کے بمبار اب برطانیہ کی فضائی دفاع کا امتحان لے رہے ہیں، جیسا کہ انہوں نے سرد جنگ کے عروج میں لیا تھا۔ سیکڑوں شدت پسند برطانوی نوجوان شام [مزید پڑھیے]

1 2 3