Abd Add
 

امریکا

بھارت اور چین کے درمیان سخت کشیدگی، تیار رہا جائے

May 16, 2021 // 0 Comments

گزشتہ سال خاصہ ہنگامہ خیز رہا، بھارت اور چین کے درمیان سرحد پر چار دہائیوں کی سب سے خونی جھڑپ ہوئی،رواں برس کے آغاز میں دونوں ممالک نے لداخ کے علاقے سے فوجیں پیچھے ہٹانے پر اتفاق کیا۔ اس معاہدے سے مسلح تصاد م کا فوری خطرہ کم ہوگیا، لیکن تناؤ برقرار ہے اور کسی بھی وقت تنازع پھر سر اٹھا سکتا ہے۔ جیسا کہ بھارتی وزیر خارجہ سبرامنیم جے شنکر نے ۲۰۲۰ء میں چین اور بھارت کے تعلقات کو انتہائی پریشان کن قرار دیا۔ ۲۰۱۵ء میں ہنگامی منصوبہ بندی میمورنڈم (سی پی ایم) نے امریکی سیکورٹی مفادات کے حوالے سے چین اور بھارت کے درمیان فوجی تصادم کے خطرے کو اجاگر کیا تھا۔ یہ خطرہ ابھی تک باقی ہے اور اس پر توجہ دینے [مزید پڑھیے]

امریکی ایٹمی ہتھیاروں کا مستقبل؟

March 16, 2021 // 0 Comments

جس وقت ’’منٹ مین ۳‘‘ نامی بین البراعظمی میزائل پر کام شروع ہواتھا اس وقت لنڈن جانسن امریکا کے صدر تھے اور ویتنام جنگ اپنے عروج پر تھی۔ ۱۹۷۰ء میں جب یہ میزائل باقاعد ہ سروس میں آیا تو یہ وہ پہلا میزائل تھا جو ایک سے زیادہ وار ہیڈ کو متعدد مختلف اہداف تک پہنچا سکتا تھا۔ اس بات کو ۵۰ سال ہونے کو آئے ہیں اور اس وقت ’منٹ مین ۳‘ امریکا کا واحد بین البراعظمی میزائل ہے۔ امریکا کی ۵ مغربی ریاستوں میں چار سو سے زائد میزائل صدارتی حکم ملنے کے چند لمحوں کے اندر فائر کیے جانے کے لیے تیار ہیں۔ امریکا کا ایٹمی مثلث زمین پر موجود اڈوں، سمندر میں موجود آب دوزوں اور فضا میں اڑتے بمبار تیاروں [مزید پڑھیے]

جنوب مشرقی ایشیا، امریکا چین دشمنی کا مرکز

March 16, 2021 // 1 Comment

امریکا اور روس نے ۵۴ سال تک ایک دوسرے کے خلاف پوری دنیا میں پراکسی جنگ لڑی ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان سرد جنگ کا مرکز یورپ تھا۔ جہاں سوویت یونین مسلسل اپنے حلیف ممالک کی یونین سے علیحدگی کے حوالے سے فکرمند رہتا تھا جبکہ امریکا کو یورپ میں اپنے اتحادیوں کی کمزوری کا خوف لاحق رہتا تھا۔ چین اور امریکا کا مقابلہ سرد جنگ سے بالکل مختلف ہے۔ دونوں ممالک کی مسلح افواج کہیں بھی ایک دوسرے کے سامنے موجود نہیں ہیں۔ اگرچہ تائیوان اور شمالی کوریا تناؤ کا مرکز ہیں اور دونوں تنازعات دہائیوں سے جاری ہیں، لیکن چین اور امریکا کے درمیان دشمنی کا مرکز جنوب مشرقی ایشیا بنے گا۔ اس خطے میں تنازع کی کوئی واضح شکل موجود نہ ہونے [مزید پڑھیے]

1 2 3 15