Abd Add
 

شمارہ 16 اکتوبر 2012

پندرہ روزہ معارف فیچر کراچی
جلد نمبر:5، شمارہ نمبر:20

عقیدۂ توحید و رسالت، مسلم اُمت کی مستحکم بنیاد ہے!

October 16, 2012 // 0 Comments

پیو ریسرچ سینٹر کے تازہ مطالعے کے مطابق دنیا میں اس وقت ایک ارب ساٹھ کروڑ مسلمان ہیں، جو کرۂ ارض کے مختلف خطوں میں پھیلے ہوئے ہیں۔ اور ان کی بہت بڑی اکثریت (۸۵ سے ۱۰۰ فیصد) اسلام کے بنیادی عقائد پر متحد و متفق ہے۔ توحید، رسالتِ محمدیؐ، رمضان کے روزے۔ البتہ دیگر امور میں اسلامی احکام کی تعبیر و تشریح میں اختلافات پائے جاتے ہیں۔ سینٹر نے تمام براعظموں کے ۳۹ ملکوں میں اس مطالعے کا کام ۲۰۰۸ء میں شروع کیا تھا، جس کی رپورٹ، اگست کے دوسرے ہفتے میں جاری کی گئی۔ (ایشین ایج ۱۰؍ اگست) اس رپورٹ میں عالمی مسلم آبادی کے ۶۷ فیصد حصے کا احاطہ کیا گیا۔ مختلف ممالک کے ۳۸ ہزار افراد سے ۸۰ زبانوں میں سوالات [مزید پڑھیے]

طالبان کام کر گئے!

October 16, 2012 // 0 Comments

افغانستان میں افغان فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کے ہاتھوں اتحادی فوجیوں کی ہلاکت کے بڑھتے ہوئے واقعات کی روشنی میں نیٹو کمانڈر جنرل جان ایلن نے مشترکہ گشت محدود کرنے کا حکم دے کر اس نوعیت کے واقعات کی سنگینی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے ۱۶؍ستمبر کو مشترکہ گشت محدود کرنے کا جو حکم دیا اس سے ایک دن قبل بھی افغان فوجیوں کے حملے میں چار امریکی اور دو برطانوی فوجی مارے گئے۔ سال رواں کے دوران فائرنگ سے مارے جانے والے فوجیوں کی تعداد ۵۱ ہوگئی۔ ۲۰۱۱ء میں یہ تعداد ۳۵ اور ۲۰۰۸ء میں صرف ۲ تھی۔ مشترکہ گشت محدود کرنے کا حکم جنگ کے میدان میں مصروف افسران اور برطانیہ میں ایوان اقتدار دونوں کے لیے انتہائی حیرت کا باعث بنا، [مزید پڑھیے]

گستاخانہ امریکی فلم، عالم اسلام اور احتجاج

October 16, 2012 // 0 Comments

امریکا کی ایک گستاخانہ فلم پر اسلامی معاشروں میں جو ردعمل دکھائی دیا ہے، اس سے بہت سے مسلمان پریشان دکھائی دیے ہیں۔ بہتوں کی نظر میں احتجاج حد سے گزر گیا اور اس سے صرف مسائل پیدا ہوئے۔ یہی حال مبلغین اور واعظین کی تقاریر کا تھا۔ ۱۴؍ ستمبر کو مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے مشہور زمانہ تحریر اسکوائر میں ظہر کی نماز کے بعد ایک خطیب کھڑا ہوا اور اس نے مجمع کو مخاطب کرکے بولنا شروع کیا۔ انتہائی پرجوش انداز سے خطاب کرتے ہوئے اُس نے مسلمان بھائیوں کو صلیبی جنگجوؤں سے مقابلے کے لیے ہر قسم کے ہتھیاروں کے ساتھ تیار رہنے کو کہا۔ اس تقریر کے کچھ ہی دیر بعد بڑی تعداد میں نوجوانوں نے امریکی سفارت خانے کی سلامتی [مزید پڑھیے]

النہضہ ’’عفریت‘‘ کو پال رہی ہے؟

October 16, 2012 // 0 Comments

تیونس میں اسلام پسندوں کی حکومت سلفیوں سے بہتر تعلقات کے معاملے میں خاصی شاکی اور محتاط ہے۔ گستاخانہ فلم کے خلاف ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے جب لیبیا کے شہر بن غازی میں مظاہرین نے امریکی سفیر کرس اسٹیونز کو مار ڈالا اُس کے صرف تین دن بعد تیونس میں بھی بنیاد پرست اور انتہاپسند مسلمانوں نے امریکی سفارت خانے پر دھاوا بول دیا۔ پولیس نے مظاہرین پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں چار افراد مارے گئے۔ اس واقعے نے تیونس میں دو غیر اسلام پسند جماعتوں کے ساتھ مل کر حکومت بنانے والی النہضہ پارٹی کو اسپاٹ لائٹ میں لا کھڑا کیا۔ النہضہ پارٹی پر یہ الزام تواتر سے لگایا جاتا رہا ہے کہ وہ بنیاد پرست سلفیوں سے نمٹنے کے معاملے [مزید پڑھیے]